بدقسمت امریکی،سانپ کا ڈنگ بھی کھایا اور جیل بھی جائے گا

بدقسمت امریکی،سانپ کا ڈنگ بھی کھایا اور جیل بھی جائے گا
بدقسمت امریکی،سانپ کا ڈنگ بھی کھایا اور جیل بھی جائے گا

  

نیویارک (نیوز ڈیسک) ایک بدقسمت امریکی کو سانپ کا ڈسنا اس قدر مہنگا پڑا کہ اسے علاج کے لئے ہسپتال تو جانا ہی پڑا تاہم اب اس وجہ سے اسے جیل کا بھی سامنا ہے۔ تفصیلات کے مطابق فلوریڈا سے تعلق رکھنے والے ”ایڈی چیمز لین“ کو گزشتہ برس ایک گھر میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے کے جرم میں 80 روز قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ اس کے بعد اسے ایک نگران پولیس افسر کی رہنمائی میں مشروط طور پر رہا کردیا گیا۔ 19 سالہ ایڈی 23 جولائی کو اپنی محبوبہ کے گھر پر تھا کہ اس نے دیکھا ایک سانپ ہمسایوں کی بلی اور بچے کو خوفزدہ کررہا ہے۔ ایڈی نے سانپ پکڑ کر اسے مچھلیوں کے ٹینک میں ڈال دیا۔ چند روز قبل سانپ نے اسے کاٹ لیا۔ یہ کورال سانپ تھا جو کہ انتہائی تیز زہر کا حامل سمجھا جاتا ہے، ڈسے جانے کے محض 30 منٹ بعد ایڈی کی انگلی مفلوج ہوگئی اور پھر اس کی سانس بھی اکھڑنے لگی۔ اسے فوری طور پر مقامی ہسپتال لے جایا گیا جہاں 3 روز تک اس کا علاج ہوتا رہا۔ اب پولیس کا کہنا ہے کہ یہ سانپ پالنا ایڈی کی جانب سے پیرول کی خلاف ورزی تھی کیونکہ ایسے زہریلے سانپ پالن کے لئے ٹریننگ اور محکمہ جنگلی حیات سے باقاعدہ لائسنس لینا پڑتا ہے۔ اب پیرول کی خلاف ورزی ثابت ہوئی تو اسے 25 سال تک قید کی سزا ہوسکتی ہے تاہم ایڈی کا کہنا ہے کہ وہ خلاف ورزی کا مرتکب نہیں ہوا، اس نے ایک نیکی کی اور یہ سانپ اس نے پال نہیں رکھا تھا۔

مزید : تفریح