1GB ڈیٹا پر مشتمل فلم 0.2 ملی سیکنڈ میں ڈاﺅن لوڈ

1GB ڈیٹا پر مشتمل فلم 0.2 ملی سیکنڈ میں ڈاﺅن لوڈ
1GB ڈیٹا پر مشتمل فلم 0.2 ملی سیکنڈ میں ڈاﺅن لوڈ

  

کوپن ہیگن (نیوز ڈیسک) جدید دور کے انٹرنیٹ پر ٹیکسٹ اور آواز کے ساتھ ویڈیو بھی ڈاﺅن لوڈ کیلئے دستیاب ہے لیکن ویڈیو ڈاﺅن لوڈ کرتے ہوئے سست رفتار کی وجہ سے سخت تکلیف اور کوفت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ ڈنمارک کے سائنسدانوں نے انٹرنیٹ کی رفتار تیز کرنے کا ایسا حل نکالا ہے کہ جو واقعی ناقابل یقین ہے۔ ٹیکنیکل یونیورسٹی آف ڈنمارک کے سائنسدانوں نے نئی قسم کی آپٹیکل فائبر ایجاد کی ہے جس پر مشتمل نیٹ ورک 1GB (1024MB) ڈیٹا پر مشتمل فلم کو 0.2 ملی سیکنڈ میں ڈاﺅن لوڈ کرسکتا ہے یعنی پلک جھپکنے سے بھی پہلے۔ اس حیرت انگیز آپٹیکل فائبر میں عام فائبر کے ایک کور کی بجائے سات کور استعمال کئے گئے ہیں لیکن دلچسپ بات یہ ہے کہ اس کی موٹائی عام فائبر جتنی ہی ہے۔ یہ فائبر ڈیٹا کو ناقابل یقین 43 ٹیرا بائٹ (44032GB) فی سیکنڈ کی رفتار سے منتقل کرسکتی ہے۔ جو کہ ایک ورلڈ ریکارڈ ہے۔ اس پہلے تیز ترین ڈیٹا منتقلی کا ریکارڈ 32 ٹیرا بائٹ فی سیکنڈ تھا جو کہ جرمن سائنسدانوں نے قائم کیا تھا۔

مزید : صفحہ آخر