’تمھیں جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا ،اب ہوٹل کا بل ادا کرو۔۔۔‘

’تمھیں جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا ،اب ہوٹل کا بل ادا کرو۔۔۔‘
’تمھیں جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا ،اب ہوٹل کا بل ادا کرو۔۔۔‘

  


نئی دہلی (نیوز ڈیسک) خواتین کے ریپ کا مسئلہ اس وقت بھارت کے بڑے مسئلوں میں سے ایک بن چکا ہے اور آئے دن ایسی ایسی کہانیاں سامنے آرہی ہیں کہ سن کر کانوں پر یقین نہیں آتا۔ تازہ واقعہ مانی نگر سے تعلق رکھنے والی ایک 17 سالہ دلت لڑکی کے ساتھ پیش آیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ممکنہ طور پر لڑکی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد اس قدر ڈرایا گیا کہ ابتدائی طور پر وہ کسی بھی قسم کی تفصیلات بتانے سے گریزاں تھی۔ تاہم تفتیش سے معلوم ہوا کہ چند روز قبل قریباً شام ساڑھے چھ بجے ایک لڑکے ظفر کے ساتھ گھومنے گئی۔ انہوں نے ایک ٹھیلے سے کھانا کھایا اور پھر یہ لڑکا اسے ایک مقامی ہوٹل میں لے گیا۔ وہاں اس لڑکے کے 3 دوست جمع ہوگئے اور چاروں نے اسے زیادتی کا نشانہ بنایا۔ پھر انہوں نے ہوٹل سے چیک آﺅٹ کیا اور 27 جولائی کو قریباً رات ساڑھے بارہ بجے اسے سڑک کنارے چھوڑ کر چلے گئے۔ حیرت انگیز طور پر ان میں سے ایک لڑکا واپس آیا اور اسے اسی ہوٹل میں واپس لے گیا۔ اگلی دوپہر تک اس نے لڑکی کو اپنی ہوس کا نشانہ بنایا اور پھر 700 روپے کا بل ادا کئے بغیر اسے وہیں چھوڑ کر چلا گیا۔ لڑکی کو ہوش آیا تو گھبرا کر بل کی ادائیگی کیلئے مختلف لوگوں کو فون کرنا شروع کردیا۔ بالآخر ایک دوست نے گھر والوں کو خبر دی، جو پولیس کے ساتھ موقع پر پہنچ گئے۔

مزید : جرم و انصاف