وزیراعلی پنجاب کادورہ چین ۔۔۔ ترقی و خوشحالی کی طرف ایک اور قدم

وزیراعلی پنجاب کادورہ چین ۔۔۔ ترقی و خوشحالی کی طرف ایک اور قدم
 وزیراعلی پنجاب کادورہ چین ۔۔۔ ترقی و خوشحالی کی طرف ایک اور قدم

  

گزشتہ ہفتے وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف چین کے دورہ پر گئے تو اس بات کا حقیقی اندازہ ہوا کہ واقعی چینی ہمارے ا یسے بھائی ہیں جو پاکستان کو ترقی یافتہ قوموں کی صف میں کھڑا کرنے کے لئے تمام شعبوں خواہ وہ معاشی شعبہ ہو یا دفاعی ہمارے شانہ بشانہ کام کرنے کے لئے ہمہ وقت تیار ہیں۔ وزیراعلی پنجاب کے دورہ سے پاک چین دوستی کا دائرہ کار وفاق کی سطح سے آگے بڑھ کر صوبوں تک پھیل رہا ہے جو یقیناًایک مثبت اور خوش کن پہلو ہے جس سے صوبے میں صنعتی، معاشی اور تجارتی سرگرمیاں بڑھیں گی ۔ ترقی و خوشحالی کا دور دورہ ہوگا، روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے اور عوام کا معیار زندگی بلند ہوگا۔زیادہ صنعتیں لگنے سے صوبہ میں مقابلے کا رجحان پیدا ہوگا اور مارکیٹ میں دیرپا ، سستی اشیائے ضروریہ دستیاب ہوں گی۔

وزیراعلیٰ کے دورہ چین کے دوران غیرمعمولی انتظامات کئے گئے اوروزیراعلیٰ کو دورے کے دوران وہ پروٹوکول دیا گیا جو عام طور پر سربراہان مملکت یا مختلف ممالک کے وزرائے اعظم کو دیا جاتا ہے۔وزیراعلیٰ کے دورے کے دوران ٹریفک کے بھی خصوصی انتظامات کئے گئے ۔دورہ چین کے دوران ایک چینی وزیر، وزیر مہمانداری کے طور پر وزیراعلیٰ شہبازشریف کے ہمراہ رہے۔ چین کے وزیر ژانگ ژیاؤ سانگ(Mr. Zheng Xiaosong) بھی وزیراعلیٰ کے ہمراہ بیجنگ سے ٹرین پر جنان آئے۔ وزیراعلیٰ شہبازشریف کی دورہ چین کے دوران غیرمعمولی پذیرائی چینی قیادت کی جانب سے پنجاب حکومت کی لیڈرشپ پر بھرپور اعتماد کا اظہار ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف کے دورے کو چین کے مختلف محکموں ، سرکاری وزارتوں اور چین کی حکمران جماعت کیمونسٹ پارٹی کی طرف سے خصوصی اہمیت دی گئی ۔ چین کی کیمونسٹ پارٹی کی تاریخ میں بہت کم ایسا ہوا ہے کہ کسی بین الاقوامی مہمان کے اعزاز میں ایک سے زیادہ استقبالیہ تقریبات یا ملاقاتوں کا اہتمام کیا گیا ہو۔ کیمونسٹ پارٹی آف چائنہ کے اعلی حکام کی جانب سے وزیر اعلی محمد شہباز شریف کے اعزاز میں دو روز میں چار استقبالیہ تقریبات منعقد کی گئیں اور وزیر اعلی کی کیمونسٹ پارٹی کے سرکردہ رہنماؤں اور وزراء سے ملاقاتیں بھی کیں۔ کیمونسٹ پارٹی کے رہنماؤں اور چین کے نائب وزیر اعظم ژانگ جیالی نے ملاقاتوں کے دوران وزیر اعلی محمد شہباز شریف سے وزیر اعظم محمد نواز شریف کی خیریت دریافت کی اور ان کی صحتیابی کے حوالے سے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔ ان ملاقاتوں میں پاکستان مسلم لیگ (ن) اور کیمونسٹ پارٹی آف چائنہ کے مابین تعلقات کو مستحکم کرنے اور پارٹی کی سطح پروفود کے زیادہ سے زیادہ تبادلوں پر اتفاق کیا گیا۔ وزیر اعلی شہباز شریف کا دورہ چین بین الاقوامی اور علاقائی امور کے تناظر میں غیر معمولی اہمیت کا حامل ہے ۔

وزیراعلیٰ کے دورہ چین کے دوران مجموعی طورپر 45معاہدوں اورمفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط کیے گئے ،جن میں 20معاہدے اور 25مفاہمت کی یادداشتیں شامل ہیں۔وزیراعلیٰ شہباز شریف کے دورہ چین کو چین کی اعلی قیادت اورکیمونسٹ پارٹی آف چائنہ کے وزراء کی جانب سے بہت اہمیت دی گئی اوردورہ چین کے دوران ہر جگہ ان کا پرتپاک استقبال کیا گیااوران کے اعزاز میں خصوصی تقریبات کا انعقاد کیا گیا۔وزیراعلیٰ شہبازشریف دورہ چین کے دوران روزانہ بغیر آرام کیے مسلسل درجنوں میٹنگزکیں جبکہ مختلف تقریبات میں بھی وہ شریک ہوئے۔

وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہبازشریف نے بیجنگ میں چین کے نائب وزیراعظم ژانگ جیالی(Mr.Zhang Gaoli)سے ملاقات کی،جس میں کیمونسٹ پارٹی آف چائنہ اور پاکستان مسلم لیگ(ن)کے مابین تعلقات کے مزیدفروغ کیلئے موثر اقدامات کرنے پر اتفاق ہوا۔ نائب وزیراعظم چین نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دونوں سیاسی جماعتوں کے مابین تعلقات میں اضافے کیلئے نئی راہوں پرکام کرنا ہوگااورکیمونسٹ پارٹی اور پاکستان مسلم لیگ(ن) کے مابین تعاون کو فروغ دینے کیلئے ہر ممکن تعاون جاری رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ چین پاکستان کے ساتھ ترقیاتی تعاون کے حوالے سے پنجاب کی اہمیت سے بخوبی آگاہ ہے ۔ چین کے نائب وزیراعظم نے وزیراعظم نوازشریف کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کیمونسٹ پارٹی آف چائنہ کوعوام کی بھر پور حمایت حاصل ہے۔ شوشلزم کا نظریہ اورچین کے عظیم تاریخی ورثے کی قوت چین کی موجودہ ترقی کے پیچھے کارفرماہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں مقیم چینی باشندوں کی سکیورٹی کیلئے تمام ضروری اقدامات کیے جارہے ہیں اور پاک چین تعلقات کی65ویں سالگرہ پر ہم یہ عہد کرتے ہیں کہ دونوں ملکوں کے مابین تعاون کو عوام کی بہتری اور خوشحالی کیلئے بروئے کار لائیں گے۔چین کی جانب سے ٹیکنالوجی سمیت صنعتوں کی بیرون ملک منتقلی کی حکمت عملی میں پاکستان اس کا سب سے بہترپارٹنر ہے اورہم اس ضمن میں چین کے ساتھ ملکر اقدامات کریں گے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے بیجنگ میں ایگزم بینک آف چائنہ کی چیئرپرسن ہو ژیاؤ لیان(Madam Hu Xiaolian)سے ملاقات کی۔ ایگزم بینک آف چائنہ کی چیئرپرسن نے پنجاب میں چائنہ پاکستان اکنامک کوریڈور کے تحت منصوبوں کی تعمیر کی رفتار کو تاریخی خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ چین میں منصوبوں کی تیز رفتاری سے تکمیل کیلئے شینزن (Shen-zhen) سپیڈ کی اصطلاح استعمال کرتے تھے لیکن اب پنجاب نے شینزن سپیڈ کی اصطلاح کو پیچھے چھوڑ دیا ہے اور اب چین میں تیز رفتاری سے منصوبے مکمل کرنے کے حوالے سے ’’پنجاب سپیڈ ‘‘کی اصطلاح استعمال کی جاتی ہے۔ ایگزم بینک کی چیئرپرسن نے کہا کہ آنیوالے دور میں پاکستان میں چینی سرمایہ کاری میں کئی گنا اضافہ ہوگا اور ایگزم بینک کی اربوں ڈالر کی سرمایہ کاری کے تحت پنجاب میں متعدد منصوبے زیرتکمیل ہیں۔ واضح رہے کہ شینزن چین کے ان شہروں میں شامل ہے جہاں چین کا پہلا انڈسٹریل و اکنامک زون بنایا گیا اور چینیوں نے وہاں جناتی انداز میں کام کرکے دنیا کو حیران کر دیا تھا۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے چیئرپرسن ایگزم بینک ژیاؤلیان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت پاک چین دوستی کے نغمے صرف پاکستان میں ہی نہیں پوری دنیا میں گونج رہے ہیں اور یہ کہانی محض دوستی کی کہانی نہیں بلکہ یہ داستان دیانت، امانت اور شفافیت کی داستان ہے۔ پنجاب میں منصوبوں کی بروقت اور بلاتعطل تکمیل کیلئے چین کے مالیاتی ادارے پاک چین تعاون کے فروغ میں تاریخی کردار ادا کر رہے ہیں اور ہم لاہور اورنج لائن میٹروٹرین کے منصوبے کیلئے وسائل کی بروقت اور بلاتعطل فراہمی پر ایگزم بینک کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ میرے لئے چین میں ’’پنجاب سپیڈ‘‘ کی اصطلاح استعمال کی گئی ہے، یہ میرا ہی نہیں بلکہ پنجاب حکومت اور پاکستان کے عوام کیلئے ایک اعزاز کی حیثیت رکھتا ہے اور ہم انشاء اللہ اس سپیڈ کو برقرار رکھیں گے۔

وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے انٹرنیشنل ڈیپارٹمنٹ آف دی کیمونسٹ پارٹی آف چائنہ، بیجنگ میں کیمونسٹ پارٹی آف چائنہ کے انٹرنیشنل ڈیپارٹمنٹ کے وزیر سانگ تاؤ (Mr. Song Tao)سے بھی ملاقات کی۔ کیمونسٹ پارٹی آف چائنہ کے وزیر سانگ تاؤ نے کہا کہ کیمونسٹ پارٹی آف چائنہ اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کے درمیان آئیڈیل تعلقات ہیں اور وزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت میں دونوں جماعتوں کے مابین تعلقات کو فروغ حاصل ہوا ہے۔ پاکستان سے پارٹی کی سطح پر وفود کے تبادلوں کا خیرمقدم کریں گے اور ہماری خواہش ہے کہ پارٹی سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں پر مشتمل وفود کو زیادہ سے زیادہ چین بھجوایا جائے۔ چین مشکل کی ہر گھڑی میں پاکستان کو اپنے ساتھ پائے گا۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کیمونسٹ پارٹی آف چائنہ کے وزیر سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ چین کو دوسری بڑی معاشی طاقت بنانے میں کیمونسٹ پارٹی، چینی صدر شی جن پنگMr. Xi Jinping) (اور وزیراعظم لی کی چیانگ (Mr. Li Keqiang) کا بہت بڑا ہاتھ ہے اور چین کی ترقی اس کی قیادت اور عوام کی محنت اور قربانیوں کا معجزہ ہے۔ہماری حکومت صرف چین کی تعریف ہی نہیں کرتی بلکہ چین کی ترقی سے بہت کچھ سیکھنے کی بھی کوشش کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت چین میں 70 پاکستانی طلبا و طالبات چینی زبان سیکھ رہے ہیں اورہم نوجوانوں کے مزید وفود جلد چین بھجوائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ میرے پاس وہ الفاظ نہیں ہیں کہ چین کے بے پایاں اور ناقابل فراموش تعاون کا شکریہ ادا کرسکوں کیونکہ چین نے اس وقت پاکستان کیساتھ دوستی کا حق ادا کیا جب ہمیں دہشت گردی اور توانائی بحران کا سامنا تھا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین پہلے محض دوست تھے، اب انہیں ایک دوسرے سے محبت ہو چکی ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پاکستانی عوام، حکومت اور فوج دہشت گردی کے خلاف ایک صفحے پر ہیں۔ دہشت گردی چین میں ہو یا پاکستان میں، دہشت گرد ہمارے مشترکہ دشمن ہیں۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف کی موجودگی میں بیجنگ میں انڈسٹریل پارک کے قیام کے معاہدے پر دستخط کیے گئے۔معاہدے کے تحت چین کے سرمایہ کار اور صنعتکار پنجاب میں چونیاں انڈسٹریل ا سٹیٹ میں ایک انڈسٹریل پارک بنائیں گے۔انڈسٹریل پارک میں چین کے پرائیویٹ سیکٹر کے سرمایہ کار فیکٹریاں لگائیں گے۔انڈسٹریل پارک 2 ہزار ایکڑ پر مشتمل ہوگا۔ منصوبے پر 20 ارب روپے لاگت آئے گی اور اس ضمن میںیہ معاہدہ غریب وال سیمنٹ گروپ اور چائنہ انٹرنیشنل ٹرسٹ اینڈ انویسٹمنٹ کارپوریشن (CITIC) کے درمیان طے پایا۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف سے بیجنگ میں چین کی وزارت صنعت و انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ڈائریکٹر جنرل لیومن (Mr.Luo Min)نے ملاقات کی،جس میں پنجاب میں صنعتی عمل کو تیزکرنے اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے فروغ کے حوالے سے تعاون پر تبادلہ خیال ہوا۔چین کی300انڈسٹریل اسٹیٹس پر مشتمل تنظیم کے چےئرمین ژائی رونگیاؤ (Mr.Shi Rongyao)نے بھی وزیراعلیٰ سے ملاقات کی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب میں چینی صنعتکاروں کو کارخانے لگانے کیلئے ہر طرح کی سہولتیں دیں گے۔

وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے چین کے نائب وزیر خارجہ ژانگ یاسوئی(Mr. Zhang Yesui) سے ملاقات کی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ چین کی دوستی ہر پاکستانی کی متاع عزیز ہے۔ چائنہ پاکستان اکنامک کوریڈور کی تکمیل سے خطے میں تاریخ کا دھارا بدل جائے گا۔ سی پیک کے منصوبوں سے پاکستان سمیت خطے میں مختلف ممالک کی برآمدات کو فروغ حاصل ہوگا اور اس عظیم منصوبے سے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے اور انتہاپسندی کے رجحان کا خاتمہ ہوگا۔ پاکستان ’’ون چائنہ پالیسی‘‘ اور تبت کے مسئلے سمیت تمام علاقائی و بین الاقوامی امور پر چین کا ہمنوا رہا ہے۔ چین کے نائب وزیر خارجہ ژانگ یاسوئی نے کہا کہ چین نے ہمیشہ پاکستان کا ساتھ دیا ہے اور چین ترقی اور خوشحالی کے سفر میں پاکستان کے ساتھ قدم سے قدم ملا کر چلے گا۔ انہوں نے کہا کہ چین پاکستان کے صنعتی شعبہ کی پیداواری صلاحیت میں اضافہ کیلئے ہرممکن تعاون کرے گا اور یہ تعاون صنعتوں کی تعمیر کے علاوہ ٹیکنالوجی کی ٹرانسفر پر محیط ہوگا۔ چینی صنعتوں کی بیرون ملک منتقلی کے پروگرام میں پاکستان چین کی اولین ترجیحات میں شامل ہوگا اور جس بھی صنعتی شعبہ میں ضرورت ہوئی، ہم آپ کیساتھ ہوں گے۔ پاکستانی سفارتخانے میں چین کے مختلف سرکاری و غیرسرکاری اداروں اور پاکستان کے سرکاری و نجی اداروں کے درمیان معاہدوں اور مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخطوں کی تقریب منعقد ہوئی۔ تقریب کے دوران 7 معاہدوں اور مفاہمت کی17 یادداشتوں پر دستخط کیے گئے۔ ان معاہدوں کا تعلق ٹیکسٹائل انڈسٹریز، انڈسٹریل اسٹیٹس کے قیام، مختلف فنون میں ماسٹر ٹرینرز کی تربیت، تجارتی میلوں و نمائشوں کے فروغ، انرجی، انفراسٹرکچراور واٹر ٹریٹمنٹ سمیت زندگی کے مختلف شعبوں میں تعاون کو عملی شکل دینا ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے بیجنگ میں ایشین انفراسٹرکچر انوسٹمنٹ بینک کے صدر جن لیکون (Mr.Jin Liqun)سے ملاقات کی۔ ایشین انفراسٹرکچر انوسٹمنٹ بینک کے صدر نے چینی تعاون کے منصوبوں کیلئے ترجیحی بنیادوں پر وسائل کی فراہمی کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ چین کے مالیاتی اداروں کا پاکستان میں کام کا تجربہ بہت اچھا رہا ہے اورآئندہ بھی منصوبوں کیلئے وسائل کی فراہمی میں کوئی کمی نہیں آنے دیں گے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ چین کے بینکوں کی جانب سے وسائل کی فراہمی سے منصوبوں پرکام کی رفتار قابل رشک حدتک تیزہے اور وسائل کی پائی پائی امانت سمجھ کر ترقیاتی منصوبوں پر خرچ کی جارہی ہے۔چینی تعاون سے منصوبوں کی تکمیل سے کروڑروں پاکستانیوں کو فائدہ پہنچے گا۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے بیجنگ میں نیشنل ڈویلپمنٹ اینڈریفارم کمیشن کے وائس چےئرمین نیور بائیکلے(Mr. Nuer Baikeli) سے ملاقات کی۔ملاقات میں چائنہ پاکستان اکنامک کوریڈور کے تحت منصوبوں پر پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا گیا۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ سی پیک کے منصوبے پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کے ضامن ہیں ۔چائنہ پاکستان اکنامک کوریڈور کے تحت منصوبوں پر انتہائی محنت سے تیزرفتاری سے کام جاری ہے ۔سی پیک پاکستان کی ترقی اورعوام کی خوشحالی میں سنگ میل ثابت ہوگا۔وائس چےئرمین این ڈی آرسی نے منصوبوں کی رفتار پر اطمینا ن کااظہارکیا اور کہا کہ آئندہ بھی منصوبوں کے حوالے سے ہر ممکن تعاون جاری رکھیں گے ۔وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہبازشریف اورچین کے انرجی سیکٹر کے معروف گروپ ہیوانگ(Huaneng) کارپوریشن کے چےئرمین ژاؤپکسائی (Mr.Cao Peixi)کے مابین بیجنگ میں پاکستانی سفارتخانے میں ملاقات ہوئی۔ وزیراعلیٰ شہبازشریف نے ساہیوال کول پاور پلانٹ کے منصوبے پرانتہائی تیز رفتاری سے کام پرہیوانگ گروپ کے چےئرمین کا شکریہ ادا کیا۔چےئرمین ہیوانگ گروپ نے حکومت پنجاب کی جانب سے کیے جانے و الے انتظامات پر اطمینان کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ ہمارا گروپ پنجاب میں مزید میگاپراجیکٹس پر کام کرنے کیلئے تیار ہیں ۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے بیجنگ میں نیشنل انرجی ایڈمنسٹریشن کے ایڈمنسٹریٹر نوربیکری (Mr. Noor Bakri) سے بھی ملاقات کی۔ اس موقع پر نیشنل انرجی ایڈمنسٹریشن کے ایڈمنسٹریٹر نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں جس رفتار سے بجلی کے منصوبوں پر کام ہو رہا ہے، دنیا کی تاریخ میں اس کی مثال نہیں ملتی۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے کہا کہ ہماری محنت کے علاوہ اس میں وہ بے مثال تعاون بھی شامل ہے جو ہمیں چین کے سرکاری اور غیرسرکاری اداروں سے ملا ہے۔ انہوں نے کہا کہ توانائی منصوبوں کی تکمیل ہمارا مشن ہے۔ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے انتہائی محنت سے توانائی منصوبوں کو آگے بڑھایا ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹرآف ٹرانسپورٹ مینجمنٹ سینٹر آف بیجنگ پبلک سکیورٹی بیور وکا دورہ کیا۔وزیراعلیٰ نے بیجنگ پبلک سکیورٹی بیوروکے مختلف حصوں کا معائنہ کیا۔اس موقع پر وزیراعلیٰ کو ادارے کے بارے میں تفصیلی بریفنگ بھی دی گئی۔وزیراعلیٰ نے اس موقع پر بتایا کہ پنجاب حکومت نے عوام کے جان و مال کے تحفظ کیلئے کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹرزکے قیام کا منصوبہ بنایا ہے اورپنجاب میں انفارمیشن ٹیکنالوجی سے استفادہ کرکے عوام کی زندگیوں میں آسانیاں پیدا کرنے کے بڑے پروگرام پر عمل پیرا ہیں ۔

چین کے صوبے شین ڈونگ (Shangdong) کے شہر جنان (Jinan)میں ’’ پنجاب شین ڈونگ بزنس کانفرنس‘‘ کا انعقاد کیا گیا۔ ’’پنجاب شین ڈونگ بزنس کانفرنس ‘‘کی صدارت وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف اورشین ڈونگ صوبے کے نائب گورنرجی ژاہ زنگ کی(Mr.Ji Xiang Qi) نے مشترکہ طورپر کی۔چین کے سرمایہ کاروں، صنعتکاروں اور بزنس مینوں کی بڑی تعداد نے بزنس کانفرنس میں شرکت کی۔ چینی بزنس مینوں نے پاکستان خصوصاً پنجاب میں سرمایہ کاری کرنے کے حوالے سے اپنے تجربات اور تاثرات بیان کئے۔ کانفرنس میں چین کی صف اول کی سرکاری کمپنیوں کے سربراہان، کیمونسٹ پارٹی کے وزراء، اعلیٰ عہدیداران اور نجی شعبہ کے سرمایہ کار بھی شریک ہوئے۔پاکستان کے ممتاز سرمایہ کاروں، صنعتکاروں اور بزنس مینوں نے بھی کانفرنس میں شرکت کی۔ ’’پنجاب شین ڈونگ بزنس کانفرنس‘‘ سے شین ڈونگ صوبے کے نائب گورنرجی ژاہ زنگ کی نے اپنے خطاب میں کہا کہ میں وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف اوران کے وفد کاچین کی اعلیٰ قیادت کی طرف سے دل کی اتھاہ گہرائیوں سے خیر مقدم کرتا ہوں ۔شین ڈونگ اور پنجاب ملکر ترقیاتی تعاون میں نئے باب رقم کریں گے۔انہوں نے کہا کہ چینی قیادت نے پنجاب کو بھر پور تعاون فراہم کرنے کی ہدایت کررکھی ہے اورہم اس ضمن میں پنجاب کیساتھ قدم سے قدم ملا کرچلیں گے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ شہبازشریف نے پاک چائنہ تعلقات کو حقیقی معنوں میں آگے بڑھایا ہے ۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے بزنس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور چین کے سرمایہ کار اور صنعتکار آج تاریخ کے اہم موڑ پراکٹھے ہوئے ہیں جب چین کے46 ارب ڈالر کے عظیم سرمایہ کاری پیکیج پر ایک برس کے عرصے میں عظیم الشان کام ہو چکا ہے اور اس تاریخ ساز پیکیج کے تحت لگائے جانیوالے منصوبے کسی ایک خطے تک محدود نہیں بلکہ پاکستان کے طول و عرض پر پھیلے ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ دنیا میں روزانہ ہزاروں معاہدے ہوتے ہیں لیکن ان پر عملدرآمد کتنوں پر ہوتا ہے، یہ سوالیہ نشان ہے لیکن چائنہ پاکستان اکنامک کوریڈور کے تحت ہونے والے معاہدوں پر عملدرآمد کی رفتار اپنی مثال آپ ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے چینی شہر چنگ ڈاؤ میں معروف صنعتی اداروں ہائیر (Haier) اور ہائی سینس گروپ (Hisense Group) کا دورہ کیا۔وزیراعلیٰ نے دونوں بڑے صنعتی اداروں کے مختلف شعبوں کو معائنہ کیا۔وزیراعلیٰ کو صنعتی اداروں کی پروڈکشن اوروہاں تیار کی جانے والی اشیاء کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی گئی۔وزیراعلیٰ شہبازشریف نے اس موقع پر دونوں بڑے صنعتی اداروں کے اعلی حکام سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ صنعتی ترقی اورسائنسی اختراع کیساتھ چین کے صنعتی اداروں کاوسائل خلق خدا کیلئے وقف کرنا خوش آئند ہے اورمجھے چینی صنعتکاروں کی جانب سے کم وسائل رکھنے والے طبقات کیلئے وسائل کی فراہمی کا جان کر بہت خوشی ہوئی ہے ،بلاشبہ چینی صنعتکاروں کا یہ جذبہ قابل تعریف ہے۔انہوں نے کہا کہ وسائل رکھنے والوں کامحروم معیشت طبقات کیلئے وسائل دینابڑی نیکی ہے اوراس ضمن میں پاکستان کے سرمایہ کاروں اور صنعتکاروں کو بھی کم وسیلہ طبقات کی مدد کیلئے آگے آنا چاہیے کیونکہ خلق خدا کی خدمت ہی انسان کی تخلیق کا مقصد ہے اور مجھے امید ہے کہ پاکستان کے صنعتکار اورسرمایہ کار خلق خدا کیلئے وسائل کی فراہمی میں اپنا بھر پور کردارادا کریں گے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کیمونسٹ پارٹی آف چائنہ چنگ ڈاؤ(Qingdao) کے سیکرٹری لی چن (Mr. Li Qun)سے ملاقات کی۔ملاقات کے موقع پر پنجاب حکومت اورچنگ ڈاؤ کے مابین معاہدوں اور مفاہمت کی یادداشتوں پردستخط کیے گئے،جن کے تحت پنجاب اور چنگ ڈاؤ کے مابین تعاون بڑھانے کیلئے مشترکہ ورکنگ گروپ تشکیل دیاجائے گااوریہ مشترکہ ورکنگ گروپ مختلف شعبو ں میں تعاون کو فروغ دینے کیلئے نئے امکانات کا جائزہ لے گا۔پنجاب سرمایہ کاری بورڈ،محکمہ صنعت پنجاب اورچنگ ڈاؤکے مابین بھی مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط کیے گئے۔پنجاب کے سرمایہ کاروں اور چنگ ڈاؤ کے سرمایہ کاروں کے مابین بھی معاہدوں اور مفاہمت یادداشتوں پر دستخط ہوئے ۔جن کے تحت پنجاب میں اکنامک زونز کے قیام ،ٹیکسٹائل سیکٹر ، ٹرانسپورٹ ،انڈسٹریل اسٹیٹس، انفراسٹرکچر،ای کامرس، فنی وووکیشنل تربیت اوردیگرشعبوں میں تعاون کو فروغ دیا جائے گا۔

اس میں کوئی شک نہیں کہ چینی سرمایہ کاری سے صوبہ پنجاب کی معیشت مزید مضبوط و مستحکم ہوگی ، مشترکہ سرمایہ کاری سے برآمدات میں اضافہ کے ساتھ ساتھ عوام کے لئے روزگار کے وسیع مواقع پیدا ہوں گے اور ان کا معیار زندگی بھی بلند ہوگا۔وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف کی شروع دن سے یہ خواہش رہی ہے کہ صوبہ پنجاب دنیا کے بدلتے ہوئے تقاضوں کے مطابق ترقی کرے اور یہاں پر غیرملکی سرمایہ کار اپنا سرمایہ لگائیں تاکہ پنجاب کے عوام تمام شعبوں میں ترقی کریں، جد ید ٹیکنالوجی سے بھرپور استفادہ کرتے ہوئے صوبے کو خوشحال بنائیں تاکہ ملک اقتصادی اور معاشی طور پر مضبوط ہوسکے۔

مزید :

کالم -