کراچی میں زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی کمسن ماہم کے والد نے ملزم کی سزا تجویز کر دی 

کراچی میں زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی کمسن ماہم کے والد نے ملزم کی سزا ...
کراچی میں زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی کمسن ماہم کے والد نے ملزم کی سزا تجویز کر دی 

  

کراچی ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) کراچی میں زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی کمسن ماہم کے والد نے کہاکہ ملزم کو کم سے کم سر عام موت کی سزا ملنی چاہئے ۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کورنگی کے علاقے میں قتل ہونے والی مہم کے والد عبدالخالد نے کہا کہ ملزم ذاکر ہمارے ساتھ اٹھتا بیٹھتا تھا ، ہمیں معلوم نہیں تھا کہ یہ درندہ صفت ہے ، اگر علم ہوتا تو کب کا اسے محلے سے نکال چکے ہوتے ۔

عبدالخالد نے کہا کہ ملزم شادی شدہ ہے اور دو بچوں کا باپ ہے جبکہ ملزم کی اپنی بیٹی بھی تقریباً ماہم کی ہم عمر اور ماہم کی دوست تھی ، کم از کم اسے ماہم کا چہرہ دیکھ کر اتنی غیرت و شرم آنی چاہئے تھی کہ جس کے ساتھ وہ یہ حرکت کر رہا ہے وہ اسے چاچا کہتی تھی ، ایسے ملزم کو کم از کم سر عام سزائے موت ہونی چاہئے ۔

عبدالخالد نے کہا کہ ملزم ذاکر نے یہی سوچا ہوگا کہ میں غریب آدمی ہوں ، رو دھو کر چپ ہو جاؤں گا۔

واضح رہے کہ  کورنگی زمان ٹاؤن میں 6 سالہ بچی ماہم سے زیادتی اور قتل میں ملوث ملزم ذاکر کو ڈی این اے میچ کرنے پر گرفتار کیا گیا ہے ،  ملزم بچی کا محلہ دار اوررکشہ ڈرائیور ہے،ملزم ذاکر کو ملتان فرار ہونے سے قبل سہراب گوٹھ سے گرفتار کیا گیا تھا ۔

مقامی اخبار روزنامہ جنگ کے مطابق ڈی آئی جی ایسٹ ثاقب اسماعیل میمن نےپیش رفت سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ گرفتار ملزم کا ڈی این اے مقتولہ بچی کے کپڑوں سے حاصل کئے گئےڈی این اے سے میچ کرگیا ،گرفتار ملزم ذاکرعرف انٹول متاثرہ خاندان کا محلے داراورایک دوسرے کے ساتھ شناسائی ہے،انہوں نے بتایا کہ ملزم نے اندھیرےاوربچی کےمانوس ہونے کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اسے زیادتی کا نشانہ بنایا اوراس کے بعد قتل کردیا، گرفتار ملزم کے خلاف سب سے بڑا اور سائنٹیفک ثبوت ڈی این اے میچ کرنا ہے اور واقعہ کے عینی شاہد بھی موجود ہیں جنہوں نے ملزم کو بچی کی لاش کو پھینکتے ہوئے دیکھا ہے گواہاں کے سامنے ملزم کی شناخت پریڈ بھی کرائی جائے گی۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -سندھ -کراچی -