جوہر ٹاؤن دھماکے کے حوالے سے پولیس کو علم تھا مگر اسکے باوجود دھماکہ ہوگیا، اہم انکشاف سامنے آگیا

جوہر ٹاؤن دھماکے کے حوالے سے پولیس کو علم تھا مگر اسکے باوجود دھماکہ ہوگیا، ...
جوہر ٹاؤن دھماکے کے حوالے سے پولیس کو علم تھا مگر اسکے باوجود دھماکہ ہوگیا، اہم انکشاف سامنے آگیا

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)چند روز قبل لاہور کےعلاقہ جوہر ٹاؤن میں ہونے والے دھماکے کے حوالے سے انکشاف ہوا ہے کہ جوہر ٹاؤن دھماکے کے حوالے سے پولیس کو علم تھا مگر اسکے باوجود  پولیس دہشت گردی کی کوشش کو ناکام نہ بناسکی۔

جیو نیوز کے  تحقیقاتی رپورٹر عمر چیمہ کے مطابق  نوید نامی شخص ابتدائی طور پر دہشت گردی کی اس کارروائی میں ملوث تھا تاہم اس نے اپنا دماغ بدل لیا اور اس حوالے سے پولیس حکام کو آگاہ کیا تھا۔جوہر ٹاؤن میں 23 جولائی کو دھماکہ ہوا تھا جس میں تین افراد شہید جبکہ 20 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔نوید کا اس دھماکے میں کردار علاقے کی ریکی کرنا تھا جس کے لیے اس نے دھماکے کی جگہ کے قریب ایک فلیٹ میں پراپرٹی ڈیلر کا کام بھی شروع کیا تھا۔اس دوران اس نے کالعدم جماعت الدعوۃ کے امیر حافظ سعید کی رہائش گاہ پر تعینات سکیورٹی اہلکاروں کو کھانے کی دعوتیں بھی دیں اور ان سے اپنے مراسم بڑھانے کی کوشش کی۔تاہم اس دوران اس نے دہشت گردی کی کارروائٰ کے حوالے سے سیکیورٹی پر امور پولیس اہلکاروں کو بتایا جنہوں نے یہ بات جماعت الدعوۃ کے سیکیورٹی اہلکاروں کو بتائی۔جس کے بعد یہ بات ایک سیکیورٹی ایجنسی کو بھی بتائی گئی مگر اس کے باوجود یہ دھماکہ ہوا۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -