پنجاب میں کاروباری مسابقت کیلئے قلیل المدتی منصوبے تشکیل دیناہونگے

پنجاب میں کاروباری مسابقت کیلئے قلیل المدتی منصوبے تشکیل دیناہونگے

  

لاہور(کامرس رپورٹر))ورلڈ بینک کے ذیلی ادارے پرائیویٹ اینڈ فنانشل سیکٹر ڈویلپمنٹ کے لیڈ اکنامسٹ ونسنٹ پال میڈ (Vincent Palmade)نے کہا ہے کہ صوبہ پنجاب میں کاروباری مقابلہ کرنے کی صلاحیت کو بہتر بنانے کے لیے قلیل المدت منصوبے تشکیل دینا ہونگے تاکہ پاکستان کا برآمدی شعبہ معاشی استحکام میں اپنا بھرپور کردار ادا کرسکے۔ وہ لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر انجینئر سہیل لاشاری سے لاہور چیمبر میں ملاقات کے دوران اظہار خیال کررہے تھے۔ لاہور چیمبر کے سینئر نائب صدر میاں طارق مصباح، سابق صدر میاں انجم نثار، چیئرمین کنٹریکٹرز اینڈ بلڈرز ایسوسی ایشن اکبر شیخ، ایگزیکٹو کمیٹی اراکین ابرار احمد، مدثر مسعود چودھری اور سابق ایگزیکٹو کمیٹی رکن رحمت اللہ جاوید نے بھی اس موقع پر خطاب کیا۔ ورلڈ بینک کے لیڈ اکنامسٹ نے کہا کہ ٹھوس منصوبہ بندی کے تحت اقدامات اٹھاکر مقابلہ کرنے کی صلاحیت کو بہتر بنانا ممکن ہے جو عالمی منڈی میں اپنی جگہ بنانے کے لیے بہت ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ اعلیٰ سطح پر تشکیل دئیے گئے ایکشن پلان کے ساتھ اسے نافذ کرنے کے لیے ایک بہترین ٹیم بھی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری لاگت میں کمی لانے کے لیے فیصلہ سازی کی صلاحیت اور مانیٹرنگ کا نظام بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ صوبہ پنجاب میں وسائل کی کوئی کمی نہیں ، تھوڑی توجہ دیکر معاشی فائدے حاصل اور روزگار کے نئے مواقع پیدا کیے جاسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صوبہ پنجاب زراعت و سیاحت کے حوالے سے بڑی خوبیوں کا حامل ہے جن سے بھرپور فائدہ اٹھانے کی ضرورت ہے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر انجینئر سہیل لاشاری نے نجی شعبے کو سہولیات دینے کے لیے ون ونڈو آپریشن کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری لاگت میں کمی لانے کے لیے سستے قرضے اور وافر توانائی کی دستیابی یقینی بنانا ضروری ہے۔

انہوں نے کہا کہ طویل ٹیکس پروسیجر سمیت دیگر بہت سی بیوروکریٹک رکاوٹیں صنعتی شعبے کی نشوونما کو متاثر کررہی ہیں ، نئے منصوبہ جات کے لیے نجی شعبے کو بھاری سرمایہ اور وقت خرچ کرنا پڑتا ہے۔ لاہور چیمبر کے سابق صدر میاں انجم نثار نے کہا کہ ایمانداری تاجروں کو تباہی سے بچانے کے لیے سمگلنگ کے ناسور پر قابو پانا ہوگا۔

مزید :

کامرس -