ڈنمارک دودھ کا دھلا، پاکستان میں کرپشن کم ہوگئی ، ٹرانسپیئرنسی انٹرنیشنل نے افغانستان اور شمالی کوریا کو کرپٹ ترین ممالک قراردیدیا

ڈنمارک دودھ کا دھلا، پاکستان میں کرپشن کم ہوگئی ، ٹرانسپیئرنسی انٹرنیشنل ...
ڈنمارک دودھ کا دھلا، پاکستان میں کرپشن کم ہوگئی ، ٹرانسپیئرنسی انٹرنیشنل نے افغانستان اور شمالی کوریا کو کرپٹ ترین ممالک قراردیدیا

  

برلن(مانیٹرنگ ڈیسک) ٹرانسپیئرنسی انٹرنیشنل نے 177ممالک میں کرپشن کی رپورٹ جاری کردی جس کے مطابق بدعنوانی میں کمی کی وجہ سے پاکستان 12درجے بہتری کے ساتھ 127ویں نمبر پر آگیاہے جبکہ افغانستان ، شمالی کوریا اور صومالیہ کو کرپٹ ترین ممالک قراردیاگیاہے ۔رپورٹ کے مطابق سب سے کم ترین کرپٹ ممالک میں ڈنمارک اور نیوزی لینڈ شامل ہیں ۔ ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل نے منگل کو اپنی تازہ سالانہ رپورٹ جاری کردی جو بدعنوانی کے مختلف مدارج کے بارے میں 177 ممالک کے لوگوں سے انٹرویو کے بعد مرتب کی گئی ہے۔اس میں بدعنوانی سے پاک ممالک کے لیے 100 نمبر رکھے گئے اور مندرجہ بالا ممالک نے اس میں صرف آٹھ پوائنٹس حاصل کیے۔رپورٹ کے مطابق ڈنمارک اور نیوزی لینڈ 91 پوائنٹس کے ساتھ بدعنوانی سے تقریباً مبرا ممالک ہیں جن کے بعد 89 پوائنٹس کے ساتھ فن لینڈ اور سویڈن کا نمبر آتا ہے۔تنظیم کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر رابرٹ برنگٹن کا کہنا ہے کہ بدعنوان ترین ممالک ایسے ہیں جہاں مختلف تنازعات چل ہیں، وہاں حکومت میں شفافیت کا مکمل فقدان نظر آئے گا، خاص طور پر آپ کو پتا چلے گاکہ احتساب بالکل بھی نہیں ہے۔ رپورٹ کے مطابق گذشتہ دورحکومت کی نسبت پاکستان میں 12 درجے بہتری دیکھنے میں آئی ہے جبکہ پاکستان ، روس ، لبنان ، آذربائیجان اور مالی بھی 127ویں نمبر پر ہیں ۔ سوڈان اور جنوبی سوڈان علیحدگی کے بعد جاری تنازعات کے باعث اس فہرست میں کم ترین پوائنٹس حاصل کرنے والے ممالک میں شامل ہیں اور ان کے ساتھ لیبیا کا شمار بھی ایسے ہی بدعنوان ممالک میں ہو رہا ہے۔خانہ جنگی کے شکار ملک شام 2009ءکے مقابلے میں رواں سال 42 درجے تنزلی ہوئی ہے۔ 

مزید :

بین الاقوامی -اہم خبریں -