فلم،ٹی وی اور تھیٹر،پاکستان میں اداکاروں کی کوئی تنظیم فعال نہیں

فلم،ٹی وی اور تھیٹر،پاکستان میں اداکاروں کی کوئی تنظیم فعال نہیں

لاہور(حسن عباس زیدی)پاکستان میں کئی بار فلم،تھیٹر اور ٹی وی فنکاروں کی نمائندہ تنظیمیں بنائی گئی ہیں لیکن ہر بار عدم دلچسپی اور چند مفاد پرستوں کی وجہ سے یہ تنظیمیں اپنے مقاصد حاصل کرنے میں ناکام رہی ہیں۔پاکستان فلم انڈسٹری کے فنکاروں کی سب سے فعال تنظیم مووی آرٹسٹ ایسی ایشن آف پاکستان (ماپ)تھی جس نے چیئرمین لیجنڈ یوسف خان کی قیادت میں کئی سال تک احسن انداز میں فنکاروں کے مسائل اور ان کی فلاح وبہبود کے سلسلے میں کام کیا ماپ کے مقابلہ میں فنکاروں کی کئی تنظیمیں معرض وجود میں آئیں لیکن جلد ہی منظر عام سے غائب ہوگئیں ان تنظیموں میں فلم برادرز کلب اور آرٹسٹ ایسوسی ایشن آف پاکستان(آپ) قابل ذکر ہیں فلم برادرز کلب تھوڑے عرصہ بعد ہی ماپ میں ضم ہوگئی تھی ۔ اس تنظیم کا چیئر مین الیاس کشمیری کو بنایا گیاتھا۔جبکہ لاہور کے مقامی ہوٹل میں ایک پروقار تقریب کے دوران آپ کے قیام کا اعلان کیا گیا اور شان کو اس تنظیم کا پہلا چیئر مین بنایاگیا آپ اپنے قیام کے تھوڑے عرصہ بعد ہی آپسی اختلافات کا شکار ہوکراپنے منطقی انجام کو پہنچ گئی جس کے بعد فلمی صنعت کی واحد نمائندہ تنظیم ماپ رہ گئی لیکن یوسف خان کے دنیا سے چلے جانے کے بعد ماپ اپنا وجود برقرار رکھنے میں کامیاب نہیں ہوسکی اور کچھ عرصہ گذرنے کے بعد وہ ماضی کا حصّہ بن گئی ۔ماپ کے خاتمے کے بعد سینئر اداکارہ اور فلم ڈائریکٹر میڈم سنگیتا نے ساتھی فنکاروں سے مشاورت کرکے فنکاروں اور تکنیک کاروں کی فلاح و بہبود کے لئے فلم فیڈریشن آف پاکستان نامی تنظیم کی بنیاد رکھی یہ تنظیم تاحال جیسے تیسے کام کررہی ہے کیونکہ میڈم سنگیتا کراچی اور بیرون ملک اپنی مصروفیات کی وجہ سے اس تنظیم کو مناسب وقت نہیں دے پاتیں جس کے باعث فلم فیڈریشن آف پاکستان کی تمام تر ذمہ داری اچھی خان نے سنبھالی ہوئی ہے اچھی خان میڈم سنگیتا کی ہدایات کے مطابق فنکاروں اور تکنیک کاروں کے مسائل اورمعاملات کے حل کے لئے کام کرتے ہیں۔اس کے علاوہ پشتو جرگہ کے نام سے ایک تنظیم ہے جو پختون فنکاروں ،پروڈیوسرز اور تکنیک کاروں کے لئے بنائی گئی تھی جس کے کرتا دھرتا سینئر پروڈیوسر گل اکبر آفریدی تھے لیکن یہ تنظیم بھی تقریباً اپنا وجود کھو چکی ہے۔پشتو فنکاروں کے لئے اداکار اور ڈائریکٹر عجب گل نے پشتو فنکاروں اور تکنیک کاروں کے لئے فلم میکرز ایسوسی ایشن بنائی جس کا چیئرمین ڈائریکٹر ارشد خان اور جنرل سیکرٹری اچھی خان کو بنایا گیا تھا لیکن یہ ایسوسی ایشن بھی اپنا وجود برقرار نہیں رکھ سکی اور غیر فعال ہوچکی ہے ۔ چھ سال قبل سیمی راحیل ،نعمان اعجاز،ہمایوں سعید،نادیہ جمیل،فیصل قریشی،ثانیہ سعید،عثمان پیرزادہ،فیصل رحمان ،ساجد حسن اور آصف رضا میر نے ایکٹرز کولیکٹو (ایکٹ)کے نام سے لاہور کے ایک مقامی ہوٹل میں ایک تنظیم کی بنیاد رکھی تقریب میں شریک تمام فنکار وں نے پرجوش انداز میں تقاریر کیں اور فنکاروں کے مسائل کے حل کے لئے بلند وبانگ دعوے کئے لیکن عملی طور پر کچھ بھی نہ ہوسکااور جلد ہی ختم ہوگئی ۔نوجوان کامیڈین کاشف پرنس کی ایک حادثہ میں ناگہانی موت کے بعد تھیٹر کے جونیئر فنکاروں نے اپنے مسائل کے حل کے لئے ایک تنظیم کی بنیاد رکھی تھیٹر فنکاروں کی تنظیم بنانے کے لئے ڈائریکٹر ڈاکٹر اجمل ملک اور اداکار شاہد خان بہت اہم کردار ادا کیا تھا ان دونوں کی کاوشوں کی جتنی تعریف کی جائے وہ کم ہے اس حوالے سے شالیمار اور ناز تھیٹرمیں تقاریب کا انعقاد کیا گیا اور منیر بلراج کو اس تنظیم کا پہلا صدر منتخب کیا گیالیکن فنکاروں کی آپسی نا اتفاقی کی وجہ سے چند ماہ بعد ہی غیر فعال ہوگئی ۔

مزید : کلچر


loading...