اجتہاد اللہ تعالیٰ سے رابطے کا ذریعہ ہے،پروفیسر ڈاکٹر محمد یوسف فاروقی

اجتہاد اللہ تعالیٰ سے رابطے کا ذریعہ ہے،پروفیسر ڈاکٹر محمد یوسف فاروقی

ملتان (سٹاف رپو رٹر) دینی سکالر پروفیسر ڈاکٹر محمد یوسف فاروقی نے کہاہے کہ مشورہ بھی اجتہاد کی ہی ایک شکل ہے جس میں انسانی رائے کو اہمیت دی جاتی ہے۔ لہٰذا کوئی علم ایسا نہیں ہے جس میں اجتہاد نہ ہو‘ اجتہاد اللہ تعالیٰ سے رابطہ کا ذریعہ ہے ‘ وہ اسلامک ریسرچ سنٹر ، بہاء الدین زکریا یونیورسٹی(بقیہ نمبر12صفحہ12پر )

ملتان کے زیراہتمام چار روزہ خطباتِ فقہ بعنوان ’’فقہ اسلامی اور ملتِ اسلامیہ کا علمی وفکری ارتقاء‘‘کے پروگرام کے چوتھے سیشن سے خطاب کر رہے تھے ‘ پروفیسر ڈاکٹر محمد یوسف فاروقی نے مزید کہا کہ اجتہاد ہمہ جہت پہلو رکھتا ہے‘ خواہ سیاسی میدان ہو ، معاشی یا سماجی سب میں اجتہاد کا کردار کلیدی ہے‘ اجتہاد کا آغاز آنحضرتؐکے عہدرسالت سے ہوا اور حضرت عمرؓکے دور میں اس کو بہت زیادہ وسعت ملی‘ رسول کریمؐنے کچھ فتح مکہ کے موقع پر مکہ میں داخلہ کے وقت امن پالیسی اپنائی جس میں اجتہاد سے کام لیا گیا‘ چوتھے خطبے کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر ڈاکٹر عبدالقدوس صہیب نے بتایا کہ اجتہاد کا دروازہ کھلا رہنا چاہیے تاکہ دین میں وسعت پیدا ہواور عوام کی مشکلات کا قابل قبول حل تلاش کیا جاسکے‘ پروگرام کی صدارت ڈاکٹر سعیدالرحمن پروفیسر شعبہ علوم اسلامیہ نے کی‘ پروگرام میں شعبہ علوم اسلامیہ کے اساتذہ اور طلباء وطالبات کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...