پیف سکالر شپ حاصل کرنیوالوں کی اکثریت کا تعلق غریب اور مزدور پیشہ خاندانوں سے، وزیراعلیٰ نے سب کو گلے لگایا

پیف سکالر شپ حاصل کرنیوالوں کی اکثریت کا تعلق غریب اور مزدور پیشہ خاندانوں ...

بہاولپور، ملتان (سٹاف رپورٹر، بیورورپورٹ+ ڈسٹرکٹ رپورٹر) اسلامیہ یونیورسٹی بغدادکیمپس کے آڈیٹوریم میں پنجاب ایجوکیشنل ایڈومنٹ فنڈکی تقریب کے دوران پیف سکالرز نے اپنے خیالات کااظہارکیا محمداعجاز جوکہ پیف سکالرز (بقیہ نمبر51صفحہ12پر )

ہے نے کہاکہ اس کاوالد مزدوری کرتاہے چولستان میں رہتے ہیں میڑک کے بعداخراجات نہیں تھے گاڑیوں کی ورکشاپ میں کام کرتاتھا50روپے روزانہ ملتے تھے پھرٹیکسٹائل ملزمیں نوکری کی بی ایس سی میں دوسری پوزیشن ملنے کے بعد پیف کاتحفہ ملا اب ماسٹرکمپیوٹرسائنس کے بعدسیکنڈری سکول میں ایجوکیٹر کی نوکری کررہاہوں فتو والی کے رہائشی عثمان یوسف نے کہاکہ اس کاوالدمیڈیکل سٹورپرملازمت کرتاتھامیڑک کے بعدٹیوشن پڑھاکرگزارہ کیاپیف کاخط ملاسکالر کیلئے منتخب ہوا اب قائداعظم میڈیکل کالج بہاولپورسے ایم بی بی ایس کرنے کے بعد بی وی ایچ میں ڈاکٹرعثمان کے نام سے جاب کررہاہوں آصفہ کنول نے بتایاکہ عرصہ پانچ سال قبل اس کاوالدفوت ہوگیاتھامیری والدہ یہ ذمہ داری کیسے نبھاتی میری5 بہنیں اورایک بھائی ہے میڑک کے امتحان میں اول پوزیشن آنے پرپیف نے سکالرشپ دیا اب پروفیسر بنوں گی محکمہ انہار کے بیلدار محمدرمضان کے بیٹے نذیراحمدنے کہاکہ پیف سکالر شپ کی وجہ سے فزیکل ایجوکیشن میں ایم ایس سی کی ہے دنیاپور میں فزیکل ایجوکیشن کاٹیچر ہے وزیراعلی نے ان سب کوگلے لگایا۔

سکالر شپ غریب خاندان

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...