بنگال میں فوج کی تعیناتی پر راجیہ سبھامیں ہنگامہ،وزیر اعلی کاگھر نہ جانے کا اعلان

بنگال میں فوج کی تعیناتی پر راجیہ سبھامیں ہنگامہ،وزیر اعلی کاگھر نہ جانے کا ...

نئی دہلی/کولکتہ (اے این این ) بھارت میں مودی سرکار کے انوکھے اقدامات،ریاست مغربی بنگال میں فوج تعینات کردی،وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی سراپااحتجا ج، فوج واپس بلائے جانے تک دفتر سے گھر نہیں جا نے کااعلان کردیا ۔میڈیارپورٹ کے مطابق بھارت میں مودی سرکار نے نوٹ بندی کا فیصلہ کر کے عوام کومشکلات سے دوچارکرنے کے بعد ایک اور انوکھا اقدام کر کے اپنے ہی ملک میں جمہوریت کیلئے خطرات پیدا کردئیے ۔رپورٹ کے مطابق مرکزی حکومت نے سیاسی چپقلش کے باعث مغربی بنگال میں ریاستی حکومت کو اطلاع دیئے بغیر کئی علاقوں میں فوج تعینات کردی جس کے خلاف مغربی بنگال میں شدید مظاہرے شروع ہوگئے جبکہ بھارتی راجیہ سبھا میں بھی فوج کی تعیناتی کے معاملے پراپوزیشن اراکین نے حکومت کے خلاف شدید احتجاج کیا اترپردیش کی سابق وزیراعلی مایاوتی نے کہاکہ مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ کے ساتھ زیادتی ہورہی ہے فوج کی تعیناتی اختیارات پر حملے کے برابر ہے ۔کانگریس رہنما ء غلام نبی آذاد نے کہا کہ سنگین معاملے پر مرکزی حکومت کوصفائی دینی ہوگی ۔مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بینرجی نے فوج کی تعیناتی کو سیاسی انتقام قرار دیا ۔انہوں نے حکومتی اقدام کی سخت مذمت کی و ہ وزیر اعلی مغربی بنگال کی سیکریٹریٹ میں موجود ہیں اورکہاہے کہ جب تک فوج واپس نہیں جاتی دفتر سے گھر نہیں جاؤں گی۔ممتا بینرجی کاکہناہے کہ مشقوں سے پہلے ریاستی حکومت سے اجازت نہیں لی گئی اور نہ ہی اطلاع دی گئی۔ بھارتی فوج نے وضاحت کی ہے کہ ریاست میں فوج کی موجودگی معمول کی مشقوں کا حصہ تھی تاہم ممتا بینرجی کا کہنا ہے کہ یہ سب مودی سرکار کا حربہ ہے جو اپنے مخالفین کو خوفزدہ رکھنا چاہتی ہے۔ ادھربھارتی وزیر دفاع منوہر پاریکر نے فوج کی تعیناتی کو معمول کی کارروائی کہتے ہوئے معاملہ دبانے کی کوشش کی تاہم ممتا بنرجی کے احتجاج پر فوج کو کئی جگہوں سے ہٹا لیا گیا ہے۔

ممتا بینر جی

مزید : صفحہ اول


loading...