’’میں کوں ہونہار بالاں دے والدین کوں مل تے وڈی خوشی تھئی اے‘‘

’’میں کوں ہونہار بالاں دے والدین کوں مل تے وڈی خوشی تھئی اے‘‘

ملتان ( سٹاف رپورٹر)وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور بغدادالجدید کیمپس میں پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کی تقریب سے کلیدی اورجذباتی خطاب کیا۔ انہوں نے پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے آغاز کے حوالے سے پس منظر بیان کیااوربتایا کہ اس عظیم کارخیر کا خیال انہیں جدہ میں غریب الوطنی کے دوران ایک سعودی ڈرائیورکی اپنے بچوں کو سعودی حکومت کی مکمل مالی معاونت سے تعلیم دلوانے پر آیا۔برطانیہ میں ایک ہےئر ڈریسر کی بچی کی کیمرج یونیورسٹی میں میرٹ پر وظیفہ حاصل کر نے کی داستان نے ان کے اس عزم کو مزیدتقویت دی۔وزیراعلیٰ نے تقریب کے دوران پیف سکالر شپ حاصل کرنیوالے نذیر احمدکے بیلداروالد محمد رمضان کو گلے لگایا اوران سے سرائیکی زبان میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ محمد رمضان’’کوں مل تے میکوں وڈی خوشی تھئی اے‘‘۔وزیر اعلیٰ نے اسلامیہ یونیورسٹی جس کے 2ہزار طلبہ کو پیف سکالرشپ پروگرام کے ذریعہ 26کروڑ روپے کے وظائف دیئے جا چکے ہیں کے ایک طالبعلم نذیر احمد اور اسکے والد کی کامیابی کی داستان سننے کے بعدکہا کہ پیف سکالر شپ نے نہ صرف نذیر احمد ،محمد اعجاز ،آصفہ کنول اورنائلہ انوش جیسے طلباوطالبات کوسکالر شپ بلکہ ان جیسے لاکھوں طلبہ کو زیور تعلیم سے آراستہ کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ نے پیف سکالر شپ کے ذریعہ الیکٹریکل انجینئر بننے والی نائلہ انوش کے ملک سے لوڈ شیڈنگ کے اندھیرے کو دور کرنے کے عزم کو سراہا۔وزیر اعلیٰ شہباز شریف نے اپنی نشست سے اٹھ کرپیف سکالرز کو خوش آمدید کہا۔ وہ محمد اعجاز، ڈاکٹر عثمان، نذیر احمداوردیگرپیف سکالرز سے گلے ملے جبکہ انہوں نے پیف سکالر آصفہ کنول اور ان کی بیوہ والدہ کے سر پر دست شفقت رکھا اور وہ کافی دیرتک ان کیساتھ محو گفتگو رہے۔

وزیراعلیٰ/ سرائیکی

مزید : راولپنڈی صفحہ اول


loading...