پنجاب اسمبلی کا اجلاس، حکومت کی عدم دلچسپی، ایوانوں سے وزراء بھی غائب

پنجاب اسمبلی کا اجلاس، حکومت کی عدم دلچسپی، ایوانوں سے وزراء بھی غائب

لاہور(نمائندہ خصوصی) پنجا ب اسمبلی کا اجلاس شروع ہونے کے20منٹ کے بعد ہی کورم پورا نہ ہونے کی وجہ سے پیر کی دوپہر دو بجے تک کے لئے ملتوی کر دیا گیا اجلاس میں حکومت کی عدم دلچسپی ایوان سے وزراء بھی غائب اور پارلیمانی سیکرٹری بھی دوسری جانب اپوزیشن رکن احسن ریاض فتیانہ کا کہنا ہے کہ اگر ہماری تحاریک اور قراردادیں اپنے صوابدیدی اختیارات کے ذریعے مسترد کی جا سکتی ہیں تو ہم بھی رولز کے اندر رہ کر اپنی صوابدید استعمال کرتے ہوئے ایسا کرتے رہیں گے۔اپنے سوالات اور تحاریک ایجنڈے پر نہ آنے کی وجہ سے اپوزیشن ارکان کے ساتھ ساتھ حکومتی ارکان نے بھی اسمبلی سیکرٹریٹ کے خلاف ایوان میں احتجاج کیا۔ تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز پنجاب اسمبلی کا اجلاس ایک گھنٹہ47منٹ کی تاخیر سے10بجکر47منٹ پر ڈپٹی سپیکر سردار شیر علی گورچانی کی صدارت میں شروع ہوا اجلاس میں محکمہ جنگلات، جنگلی حیات وماہی پروری کے بارے میں سوالوں کے جوابات دیے جانے تھے ۔نکتہ اعتراض پر سردار شہاب الدین نے کہا کہ جس محکمہ کے سوالات کے جوابات دئے جانے ہیں ان کوئی وزیر بھی ایوان میں نہیں ہے،جس پر سپیکرنے کہا کہ پارلیمانی سیکرٹری موجود ہیں ، پھر انہوں نے کہا کہ ہمارے سوالات پچھلے دو سال سے ایجنڈے پر نہیں آرہے ہم عوام کے منخب نمائندے ہیں اور ان کے مسائل کے لئے ایوان میں آتے ہیں، ہمارا بھی اتنا ہی حق ہے جتنا کہ دیگر ممبران کا ،یہی کلمات حکومتی رکن اعظمیٰ بخاری اور خدیجہ عمر نے دہرائے اور کہا کہ یہ اسمبلی سیکرٹریٹ پر ایک سوالیہ نشان ہے اس طرف خصوصی توجہ دی جائے، اگر ایسا نہ کیا گیا تو احتجاج کریں گے۔خدیجہ عمر نے انکشاف کیا کہ ساڑے تین سال گزر گئے ابھی تک مجھے کسی قائمہ کمیٹی میں ایڈجسٹ نہیں کیا گیا ۔جس پر سپیکر نے کہا کہ ان مسائل کو خسوصی طور پر دیکھوں گا۔سپیکر نے سوال کے محرک کانام پکار ہی تھا کہ احسن ریاض فتیانہ نے کورم کی نشاندہی کردی، سپیکر نے پہلے5منٹ پھر15منٹ کے لئے اجلاس روک دیا لیکن45منٹ کے بعد بھی کورم پورا نہ ہوا جس پر سپیکر نے اجلاس پیر5دسمبر2بجے دوپہر تک ملتوی کردیا۔

پنجا ب اسمبلی

مزید : صفحہ آخر


loading...