کراچی میں صفائی کے کاموں میں مکمل تعاون کریں گے،جام خان شورو

کراچی میں صفائی کے کاموں میں مکمل تعاون کریں گے،جام خان شورو

کراچی (اسٹاف رپورٹر) وزیر بلدیات سندھ جام خان شورو نے کہا ہے کہ سندھ حکومت منتخب بلدیاتی نمائندوں کے ساتھ مل کر شہر میں صفائی ستھرائی کے کاموں میں مکمل تعاون کرے گی۔ مئیر کراچی کی جانب سے شروع کی جانے والی 100 روزہ مہم سابقہ ڈپٹی کمشنرز کی جانب سے جاری مہم کا ہی تسلسل ہے۔ سندھ حکومت 2013 کے ایکٹ میں موجود بلدیاتی منتخب نمائندوں کو دئیے جانے والے تمام اختیارات دے گی۔ ڈسٹرکٹ ساؤتھ اور ایسٹ کی کونسل کی قراردادوں کی منظوری کے بعد ان ڈسٹرکٹ میں صفائی کا ٹھیکہ سندھ سولڈ ویسٹ مینجمنٹ کی معرفت چائنا کی کمپنی کو دیا گیا ہے اور باقی ڈسٹرکٹ اگر چاہتے ہیں کہ وہاں بھی ایسا ہی ہو تو وہ اپنی اپنی کونسل سے قرارداد منظور کروائیں اور اگر وہ خود صفائی ستھرائی کا کام کرنا چاہتی ہیں تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں ہے۔ سندھ حکومت نے اس سال فائیر بریگیڈ کے بیڑے میں 10 گاڑیاں اور ایک 100 میٹر کی اسنارکل شامل کررہی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو اپنے دفتر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ڈی ایم سی سینٹرل، کورنگی اور ایسٹ کے چیئرمین اور تمام ڈی ایم سیز کے میونسپل کمشنرز اور ڈپٹی کمشنرز بھی موجود تھے۔ قبل ازیں صوبائی وزیر بلدیات کی زیر صدارت تمام ڈی ایم سیز کے چیئرمین، ڈپٹی کمشنرز اور میونسپل کمشنرز کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں شہر میں جاری صفائی ستھرائی اور ترقیاتی کاموں کے حوالے اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں مئیر کراچی کی جانب سے شروع کی جانے والی 100 روزہ صفائی مہم اور شہر میں جاری ترقیاتی کاموں اور کراچی پیکج کے تحت شروع ہونے والے کاموں کے حوالے سے صوبائی وزیر کو آگاہ کیا گیا۔ اجلاس میں تمام ڈی ایم سیز کے چیئرمین اور میونسپل کمشنرز نے درپیش مسائل کے حوالے سے آگاہ کیا جبکہ تمام ڈپٹی کمشنرز نے اپنے اپنے ڈسٹرکٹ کے حوالے سے کئے جانے والے کاموں سے آگاہ کیا۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر بلدیات جام خان شورو نے کہا کہ مئیر کراچی سے ان کی اسی روز ملاقات ہوئی تھی، جس روز انہوں نے شہر میں 100 دن کی صفائی مہم کا اعلان کیا تھا اور میں نے اسی روز ان کو اپنے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرادی تھی۔ انہوں نے کہا کہ منتخب نمائندوں کے آنے سے قبل سندھ حکومت نے شہر کراچی میں صفائی مہم شروع کررکھی تھی، اب منتخب نمائندوں نے اس کام بیڑہ اٹھایا ہے، جو قابل ستائش ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج کے اجلاس میں تمام ڈی سیز اور منتخب چیئرمین کی ملاقات میں اسی بات کو یقینی بنایا گیا ہے کہ تمام مل جل کر اس کام کو انجام دیں۔ انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت منتخب نمائندوں کے ساتھ مکمل طور پر کھڑی ہے اور ہم ان کا بھرپور ساتھ دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی پیکج کے تحت میں نے گذشتہ ماہ ایک ماہ میں کام شروع ہونے کا اعلان کیا تھا اور آج بھی میں یقین دلاتا ہوں کہ اسی ماہ میں کراچی میں یونیورسٹی روڈ، نیپا چورنگی سمیت دیگر سڑکوں کی تعمیر کا آغاز کردیا جائے گا جبکہ دیگر ترقیاتی منصوبوں کا بھی اسی ماہ میں آغاز کردیا جائے گا۔ ایک سوال کے جواب میں صوبائی وزیر جام خان شورو نے کہا کہ ڈی ایم سی ساؤتھ اور ایسٹ کی کونسل کی قراردادوں کی منظوری کے بعد ان ڈی ایم سیز میں صفائی کا ٹھیکہ سندھ سولڈ ویسٹ مینجمنٹ کے توسط سے چائنا کی ایک کمپنی کو دیا گیا ہے اور وہ کمپنی ماہ فروری میں کام کا آغاز کردے گی جبکہ دیگر ڈی ایم سیز اور کے ایم سی چاہے تو وہ بھی کونسل میں قرارداد منظور کرواکر اس طرح کرسکتی ہے لیکن اگر کوئی ڈی ایم سی یا کے ایم سی سمجھتی ہے کہ وہ خود یہ کام انجام دے سکتی ہے تو بھی سندھ حکومت ان کے ساتھ بھرپور تعاون جاری رکھے گی اور انہیں سہولیات فراہم کرے گی۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ فائر بریگیڈ کے قافلے میں سندھ حکومت مزید 10 فائر ٹینڈر اور ایک 100 میٹر کی اسنارکل شامل کررہی ہے اور اس سلسلے میں مئیر کراچی کو اگر مزید مدد درکار ہوگی تو وہ بھی فراہم کی جائیں گی۔ اس موقع پر ڈسٹرکٹ سینٹرل کے چیئرمین ریحان ہاشمی، ڈسٹرکٹ کورنگی کے نئیر اور ڈسٹرکٹ ایسٹ کے معید انور نے کہا کہ ہم وزیر بلدیات سندھ کے مشکور ہیں کہ انہوں نے شہر میں صفائی ستھرائی کے لئے شروع کی جانے والی مہم میں ہمارا بھرپور ساتھ دینے کا نہ صرف وعدہ کیا ہے بلکہ انہوں نے آج کے اجلاس میں تمام ڈی سیز اور ایم سیز کے ساتھ ساتھ کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کو بھی آن بورڈ لیا ہے اور ان سب کو اس مہم میں بھرپور کردار ادا کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم سب مل کر اس شہر کو صاف و ستھرا کرنے کا عزم رکھتے ہیں اور اس مہم کے آغاز کے ساتھ ہی وزیر اعلیٰ سندھ اور اب وزیر بلدیات سندھ کی جانب سے مکمل یقین دہانی کے بعد امید ہے کہ ہم اس شہر میں موجود کوڑے کے ڈھیر اور صفائی ستھرائی کے مسائل کو حل کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...