وزیر داخلہ نہ ہٹایا اور 4 مطالبات نہ مانے تو ”گو نواز گو“ ہو گا، 2018ءمیں وزیراعظم بنوں گا: بلاول بھٹو زرداری

وزیر داخلہ نہ ہٹایا اور 4 مطالبات نہ مانے تو ”گو نواز گو“ ہو گا، 2018ءمیں ...
وزیر داخلہ نہ ہٹایا اور 4 مطالبات نہ مانے تو ”گو نواز گو“ ہو گا، 2018ءمیں وزیراعظم بنوں گا: بلاول بھٹو زرداری

  


لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ اگر 4 مطالبات نہ مانے گئے تو کراچی سے پشاور تک ”گو نواز گو“ ہو گا۔ 2018ءمیں عوام کی مدد سے ملک کا وزیراعظم بنوں گا ۔ عمران خان میرا سب سے پسندیدہ ’چاچا‘ ہے جو اس وقت رو رہا ہے۔

پہلی مرتبہ ایک ایسی پاکستانی فلم آگئی جس کی کہانی میں صرف وہی ہوگاجوآپ چاہیں گے ، دیکھنے کیلئے سینما جانے کی بھی ضرورت نہیں بلکہ ۔۔ ۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پیپلز پارٹی اس وقت کے پی میں بہت مضبوط ہے لیکن خیبرپختونخواہ دہشت گردی کی سونامی میں ڈوب رہا ہے۔نیشنل ایکشن پلان جھنگ کے ضمنی الیکشن کے بعد ختم ہو گیا ہے۔ وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار کو ہٹاﺅ اور ہمیں باصلاحیت وزیر داخلہ دو، 27 دسمبر تک ہمارے 4 مطالبات تسلیم نہ کئے گئے تو پھر ”گو نواز گو“ ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ پاکستان میں مودی کا سکرپٹ پڑھتے ہیں لیکن 2018ءمیں عوام کی مدد سے ملک کا وزیراعظم بنوں گا اور وزیراعظم ہاﺅس اور ایوان میں پیپلز پارٹی کا جھنڈا لہرائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی کی تنظیم سازی کا عمل تیز کر دیا ہے جس کے مکمل ہونے پر عوامی میدان میں اتریں گے۔

وزیراعظم نواز شریف کے معاون خصوصی طارق فاطمی اہم مشن پرکل امریکہ روانہ ہوں گے

کارکنوں کی جانب سے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے خلاف نعرے لگانے پر بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ نہ کرو، نہ کرو، عمران خان میرا پسندیدہ چا چا ہے جو اس وقت رو رہا ہے۔ کارکنوں نے ”گو نواز گو“ کے نعرے بھی بلند کئے جس پر انہوں نے کہا کہ”تخت رائے ونڈ سن لو! جیالے کیا نعرے لگا رہے ہیں۔“

مزید : لاہور /اہم خبریں


loading...