پاناما لیکس کے بعد آئس لینڈ کے وزیراعظم کا استعفیٰ تو آپ کو یاد ہوگا، لیکن اب انتخابات کے بعد وہاں کون حکومت بنارہا ہے؟ جان کر آپ کا بھی منہ کھلا کا کھلا رہ جائے گا

پاناما لیکس کے بعد آئس لینڈ کے وزیراعظم کا استعفیٰ تو آپ کو یاد ہوگا، لیکن اب ...
پاناما لیکس کے بعد آئس لینڈ کے وزیراعظم کا استعفیٰ تو آپ کو یاد ہوگا، لیکن اب انتخابات کے بعد وہاں کون حکومت بنارہا ہے؟ جان کر آپ کا بھی منہ کھلا کا کھلا رہ جائے گا

  


ریکجاویک(مانیٹرنگ ڈیسک) پانامہ لیکس میں نام آنے کے بعد عوامی دباﺅ پر آئس لینڈ کے وزیراعظم عہدے سے مستعفی ہو گئے تھے اور اسمبلی تحلیل کر کے نئے انتخابات کروا دیئے گئے تھے۔ ان انتخابات میں کوئی بھی جماعت واضح اکثریت حاصل نہ کر سکی۔ اس الیکشن میں انڈیپنڈنس پارٹی پہلے اور گرینز پارٹی دوسرے نمبر پر آئی۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق آئس لینڈ کے صدر گوڈانی جانیسن نے دونوں جماعتوں کو مل کر حکومت بنانے کو کہہ دیا جس پر دونوں جماعتوں میں طویل مذاکرات کا سلسلہ شروع ہو گیا، جو اب تک کامیاب نہیں ہو سکا۔ اب صدر نے تیسرے نمبر پر آنے والی جماعت ”پائریٹ پارٹی“ کو حکومت بنانے کی دعوت دے دی ہے۔

رپورٹ کے مطابق کمپیوٹر ہیکر پائریٹ پارٹی انتشار پسندوں، آزادی رائے کے کٹر حامیوں اور کمپیوٹر ہیکرزکے ایک گروپ پر مشتمل ہے۔ اس پارٹی کا منشور یہ ہے کہ ”انٹرنیٹ کی نگرانی یکسر ختم کر دی جائے، حکومت بالکل شفاف ہونی چاہیے، ملک کا نیا آئین بنایا جانا چاہیے۔“اس کے علاوہ یہ امریکہ کے کمپیوٹرپروفیشنل اور امریکی خفیہ ایجنسی کے سابق ملازم ایڈورڈ سنوڈین کو بھی پناہ دینے کی حامی ہے جس نے امریکی حکومت کی کئی حساس معلومات چرا کر افشاءکر دی تھیں۔

’اوئے کچھ کر گزر‘ پاکستان کی پہلی آن لائن فلم

رپورٹ کے مطابق آئس لینڈ کے صدر جانیسن نے گزشتہ روز صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ”میں نے پائریٹ پارٹی کے ایک سینئر لاءمیکر بیرگیٹا جانسڈوٹیر سے کہا ہے کہ ان کی جماعت دیگر پارٹیوں کے ساتھ مل کر حکومت بنانے کی کوشش کرے۔مجھے امید ہے کہ ہم مل کر کام کرنے کا کوئی راستہ ڈھونڈ لیں گے۔“ رپورٹ کے مطابق پائریٹ پارٹی پارلیمنٹ میں موجود دیگر چار جماعتوں کے ساتھ مذاکرات کرکے حکومت بنانے کی کوشش کرے گی۔

مزید : بین الاقوامی


loading...