اردو کے مشہور شاعر محمد شفیع خان المعروف بیکل اتساہی بھارت میں انتقال کر گئے،نماز جناز آج اتر پردیش میں ادا کی جائے گی

اردو کے مشہور شاعر محمد شفیع خان المعروف بیکل اتساہی بھارت میں انتقال کر ...
 اردو کے مشہور شاعر محمد شفیع خان المعروف بیکل اتساہی بھارت میں انتقال کر گئے،نماز جناز آج اتر پردیش میں ادا کی جائے گی

  


نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)اردو کے معروف شاعر  اور  راجیہ سبھا کے سابق رکن پارلیمنٹ حمد شفیع خان المعروف  بیکل اتساہی طویل عرصہ علیل رہنے کے بعد 87سال کی عمر میں انتقال کر گئے ،دو روز قبل انہیں برین ہیمبرج کی وجہ سے ہسپتال داخل کرایا گیا لیکن وہ جانبر نہ سکے ۔

بھارتی نجی چینل ’’انڈیا ٹی وی ‘‘ کے مطابق1928ء میں بلرام پور میں پیدا ہونے والے بیکل اتساہی کے نام سے برصغیر پاک و ہند میں مشہور محمد شفیع خان87سال کی عمر میں انتقال کر گئے ،بیکل اتساہی نے اردو اور ہندی زبان کو پورا احترام بخشا اور مقامی زبانوں کے امتزاج سے انہوں نے غزل اور شعروشاعری میں نت نئے تجربے کئے اور لوگوں سے خوب داد سمیٹی۔بیکل اتساہی کوشعر و ادب میں خصوصی خدمات انجام دینے پر 1976ء میں بھارتی حکومت نے پدم شری ایوارڈ سے بھی نوازا تھا جبکہ اترپردیش کی ریاستی حکومت نے انہیں’’ یش بھارتی ایوارڈ‘‘ دیا تھا جبکہ اس کے علاوہ وہ بھارت سمیت شاعری کی دنیا میں سینکڑوں اعزاز اپنے نام کر چکے تھے، بیکل اتساہی 1986ء میں راجیا سبھا کے رکن منتخب ہوئے تھے ۔جمعرات کے روز برین ہیمبرج ہونے پر بیکل اتساہی کو رام منوہر لوہیا ہسپتال میں داخل کرایا گیا گیا ،لیکن 2دن زیر علاج رہنے کے بعد وہ اپنے خالق حقیقی سے جاملے ۔محمد شفیع خان نے لواحقین میں 2بیٹے اور 2بیٹیاں چھوڑی ہیں ۔محمد شفیع خان کی نماز جناز ہ انکے آبائی علاقے اتر پردیش کے بلرام پور میں آج (اتوار)بعد نماز ظہر ادا کی جائے گی اور وہیں سپرد خاک کیا جائے گا ۔

مزید : بین الاقوامی


loading...