حکومت ناموس رسالت قانون میں ترمیم غیر موثر کرنے سے باز رہے ، عطاء اللہ شاہ ثالث بخاری

حکومت ناموس رسالت قانون میں ترمیم غیر موثر کرنے سے باز رہے ، عطاء اللہ شاہ ...

  

رحیم یار خان(نمائندہ پاکستان)مجلس احرار اسلام پاکستان کے مرکزی رہنما مولانا سید عطاء اللہ شاہ ثالث بخاری نے مجلس احرار اسلام کے سٹی نائب صدر وممبر مرکزی شوریٰ حافظ محمد زبیر کمبوہ کی رہائش گاہ پر مجلس احراراسلام کے رہنماؤں محمد عبداللہ حجازی ،حافظ عاصم بلوچ ،قاری شاہد بلوچ ،مولوی (بقیہ 24نمبرصفحہ7پر )

قادر بخش احرار،حافظ عاصم کمبوہ کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ مجلس احرار اسلام 1929ء سے عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کے لئے اپنی جدوجہد جاری رکھے ہوئے ہے امیر شریعت سید عطا ء اللہ شاہ بخاری ؒ کے مشن کو پورا کرنے کے لئے ہم عقیدہ ختم نبوت وقانون ناموس رسالت ؐ کے دفاع کے لئے اپنا بھرپورکرداراداکریں گے،ضلع بھر میں مجلس احرار اسلام کو منظم کیا جارہا ہے اورکارکنوں سے بھی رابطے کئے جارہے ہیں اگربیرونی دباؤ پر قانون ناموس رسالت میں ترمیم کی گئی یا اسے غیر مؤثر کرنے کی کوشش کی گئی تو مجلس احراراسلام 1953کے شہدا ختم نبوت کی تاریخ کو دہرائے گی اورعقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا انہوں نے کہا کہ علماء کرام فروعی اختلافات بھلا کر متحد ہو جائیں اسلام دشمن قوتیں امت مسلمہ کو تقسیم کرنے کے لئے سازشیں کر رہی ہیں اورفرقہ ورایت کو پھیلانے کے لئے امت مسلمہ کو تقسیم کیا جارہا ہے حکمران ناموس رسالت کے قانون میں کسی بھی قسم کی ترمیم یا اسے غیر موثر کرنے کے لئے باز رہیں ،آسیہ مسیح کو بیرونی دباؤ پر رہا کیا گیا ہے انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان سے بہتری کی کوئی امید نہیں ملک اورقومی معاشی طاقت سے نہیں نظریہ اورفکر کی بنیاد پر طاقت ورہوتی ہیں اس وقت اخلاقی اورسماجی کرپشن بھی عروج پر ہے اورمیڈیا پر بے حیائی اورعریانی کو فروغ دیا جارہا ہے ہماری نوجوان نسل کو اسلامی اقتدارسے دورکر کے انہیں سیکولر بنایا جا رہا ہے عمران خان اگر اپنا قبلہ درست کر لیں تو ملک میں حقیقی تبدیلی آسکتی ہے انہوں نے کہا کہ اگر حکومت ملک کو مدینہ کی طرز کی فلاحی ریاست بناتی ہے تو علماء کرام بھرپورساتھ دینگے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -