میونسپل کمیٹی مظفر گڑھ میں ورکرز کم ‘ درزی ‘ قصاب زیادہ ‘ محکمہ لاوارث ‘ صورتحال سنگین

میونسپل کمیٹی مظفر گڑھ میں ورکرز کم ‘ درزی ‘ قصاب زیادہ ‘ محکمہ لاوارث ‘ ...

سلطان کالونی (نمائندہ پاکستان) میونسپل کمیٹی مظفرگڑھ میں متعدد ریگولر ورکرز درزی‘ قصاب ہونے کا بڑا مبینہ انکشاف ‘چیف سینٹری انسپکٹر سیف اللہ خان کا فرنٹ مین مرتضٰی حسن ولد محمد اسلم روڈ رولر ڈرائیور ہے ذرائع فرنٹ مین ہرماہ ملازمین سے پیسے وصول کرکے سیف اللہ خان کو دیتا (بقیہ نمبر35صفحہ12پر )

ہے ریگو لر سینٹری ورکر یاسر صدیقی ،جو ٹیلرماسٹر کا کام کرتا ہے ،محمدطاہر ،محمد پرویز ولد نزیراحمد جو کہ دونوں بھائی ہیں اور پھلو کپڑے والے کی دکان پر کام کرتے ہیں ذرائع ریٹائرڈ ملازمین کی پنشن نہ دینا ظلم ہے ، چیف سینٹری انسپکٹر سیف اللہ خان کا موقف لینے کے لیے رابطہ کیا گیا تو چیف سینٹری انسپکٹر سیف اللہ خان نے اپنا موبائل کسی اور کو دے دیا آڈٹ آفیسر ملک ریاض سے موقف لینے کے لیے رابطہ کیا گیا تو ملک ریاض نے کہا کہ میں مصروف ہوں میونسپل کمیٹی مظفرگڑھ کے درجنوں ورکرز نے مبینہ طور پر کہا ہے کہ اکاوننٹ ذوہیب حمید،چیف سینٹری انسپکٹر،سیف اللہ خان ،نے ورکروں کا جینا حرام کردیا۔تفصیل کے مطابق میونسپل کمیٹی مظفرگڑھ کے اکاوننٹ ذوہیب حمیدنے محکمہ کو کروڑوں کاانکشاف کے ساتھ ساتھ مزدور ورکروں کا بھی جینا حرام کردیا ہے ریگولر ملازم جس میں یاسر شہزاد ولد محمد صفدر جو( سینٹری ورکر)بھرتی ہے مگر چوک تباخیاں میں قصاب کا کام کرتا ہے ،محمد ناصر ولد محمد شفیع یہ بھی ملازم جوکہ چیف سینٹری انسپکٹر سیف اللہ خان کا حقیقی بھائی ہے جو کہ مظفرگڑھ شہر خان گڑھی بازار میں قصاب کی دوکان چلاتا ہے اسی طرح مظفرگڑھ کی رہائیشی ماریہ طاہر جو کہ سینٹری ورکر میونسپل کمیٹی مظفرگڑھ میں عرصہ پانچ سال سے ملازم ہے اسی ملازمت کے دوران ملتان BZUمیں تعلیم حاصل کرتی رہی ہے سال رولنمبرہے 167اس نے MBAکیا ہے اور اس کو سکیل پندرہ مل چکا ہے اس وقت سینئر کلرک ہے اسی طرح محکمانہ سزا یافتہ سینٹری ورکر مشتاق ولد خادم حسین ،ثقلین ولد محمد شفیع ان دونوں کو ڈرائیور اور سپروائزر پرموٹ کردیا گیا اسی طرح ملک مرتضٰی حسن ولد محمد اسلم جو کہ سینٹری ورکر تھا اس کو روڈ رولر ڈرائیور پرموٹ کردیا گیا جبکہ مظفرگڑھ میونسپل کمیٹی میں روڈ رولر کا وجود تک نہ ہے اکاوننٹ ذوہیب حمید، کے لیے مظفرگڑھ میونسپل کمیٹی سونے کا پہاڑ ہے اس پر سال2015میں انٹی کرپشن میں مقدمہ بھی درج ہوا جس میں جرم ثابت ہونے پر جوڈیشل ہوا جیل جانا پڑا اسی طرح ملک ریاض جو کوٹ ادو میں ہی آڈٹ آفیسر تعینات تھا نے سلطان کالونی میں سے دو پرائیویٹ سکول ٹیچر جس میں ملک کاشف ،آصف کھکھ کو بھی فرضی بھرتی کرکے تنخوائیں لیکر آدھی آدھی تنخواہ خود لیتا رہا ،میونسپل کمیٹی چیف آفیسر کی سیٹ خالی پڑی ہے اس وقت میونسپل کمیٹی میں ملک محبوب MORسکیل نمبر اٹھارہ موجود ہے جبکہ چیف آفیسر کا چارج ذوہیب حمید اکاوئننٹ BSچودہ استعمال کررہا ہے ذوہیب حمید کے ساتھ ملک ریاض آڈٹ آفیسر ،سیف اللہ خان چیف سینٹری انسپکٹر ،ملک محبوب ،کلیم اختر اکاونٹ کلرک بھی مظفرگڑھ سونے کے پہاڑ سے فیض یاب ہونے لگے مزدور ورکروں کے خون پسینے کی کمائی سے بھی حصہ لینے والے وآفیسروں اور محکمہ سرکار کو کروڑوں کا ٹیکہ لگانے والے کرپٹ آفیسروں کے خلاف چیف جسٹس پاکستان وزیراعلٰی پنجاب ،نیب ،انٹی کرپشن ڈیرہ غازی خان سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ ۔

درزی ‘ قصاب

مزید : ملتان صفحہ آخر