غلط انجکشن سے بچی جاں بحق ، اتائی آزاد ، والد پر صلح کیلئے دباؤ، ذرائع

غلط انجکشن سے بچی جاں بحق ، اتائی آزاد ، والد پر صلح کیلئے دباؤ، ذرائع

  

خان پور ( نامہ نگار )اتائی کے مبینہ غلط انجکشن لگانے سے 4ماہ کی بچی جاں بحق ہو گئی ،موضع محمود کوٹ خان پور کے رہائشی افتخار احمد نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ میں چند روز قبل اپنی بیوی اور بچوں کے ہمراہ میرے سسرال کنڈانی روڈ فیروزہ گئے ہوئے تھے گزشتہ جمعرات 29نومبر کو (بقیہ نمبر37صفحہ12پر )

میری 4ماہ کی بیٹی مصباح کو ہلکا بخار ہوا جسے چیک کرانے کے لیے نزدیکی محمدی میڈیکل سٹور پر گیا جہاں پر موجود اتائی محمد افتخار نے خود کو ایم بی بی ایس ڈٖاکٹر ظاہر کر کے میری بیٹی کا چیک اپ کیا اور اسے انجکشن لگا دیا انجکشن لگتے ہی بچی کی حالت مزید خراب ہونے لگی تو اس نے کہا کہ کچھ نہیں ہوتا بچی کو گھر لے جاؤ کچھ دیر تک ٹھیک ہو جائے گی ہم گھر چلے گئے تو کچھ ہی دیر کے بعد بچی کو دورے پڑنے لگے اور میری بیٹی فوت ہو گئی جس کی میں نے چوکی فیروزہ پولیس کو رپورٹ کی تو پولیس نے ملزم کو حراست میں لے لیا جس نے لیت و لعل کے بعد اپنا جرم قبول کر لیا بعد ازاں پولیس نے شخصی ضمانت پر ملزم کو رہا کر دیا ہے افتخار احمد نے کہا کہ میری ننھی بچی نے میرے سامنے تڑپ تڑپ کر جان دی ہے اورمجھے انصاف ہوتا نظر نہیں آ رہا ہے علاقائی بااثر افراد بھی مجھ پر صلح کے لیے دباؤ ڈال رہے ہیں انہوں نے آئی جی پنجاب پولیس ، آر پی او بہاول پور ، ڈی پی او رحیم یا رخان سے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر نوٹس لے ملزم کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی کی جائے ۔

آزاد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -