نیب قوانین میں تبدیلی کی ضرورت، ریاستی رٹ پر سمجھوتہ نہیں ، نیشنل ایکشن پلانپر عملدرآمد کو یقینی بنائینگے : فواد چودھری

نیب قوانین میں تبدیلی کی ضرورت، ریاستی رٹ پر سمجھوتہ نہیں ، نیشنل ایکشن ...

  

اسلام آباد، لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک،این این آئی)وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات چوہدری فواد حسین نے کہاہے کہ تحریک لبیک کے رہنماؤں کے خلاف ثبوت جمع کر نے کے بعد کارروائی عمل میں لائی گئی ،تحریک لبیک سے بات چیت کامیاب ہوجاتی تو گرفتاریوں کی نوبت نہ آتی، معاشرے میں بغاوت نہیں چلتی، اب کوئی ان کے حق میں سڑکوں پر نہیں آئیگا ٗ ریاست کی رٹ کے قیام پر کسی قسم کا کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا ٗ تمام شر پسندوں اور انتہاپسندوں کے ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائیگا ٗموجودہ حکومت نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عملدرآمد کو یقینی بنائیگی۔ ایک انٹرویومیں وزیر اطلاعات نے کہاکہ ریاست کی رٹ کے قیام پر کسی قسم کا کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا۔انہوں نے کہاکہ حکومت تمام شرپسندوں اور انتہا پسندوں کے ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹے گی۔ انہوں نے کہا کہ تمام سیاسی جماعتوں نے نیشنل ایکشن پلان پر اتفاق رائے کیا لیکن بدقسمتی سے گزشتہ حکومت اسے مکمل طور پر نافذ کرنے میں ناکام رہی۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عملدرآمد کو یقینی بنائیگی۔ آئی جی اسلام آباد کے معاملے میں اعظم سواتی ٹھیک ہیں، نیب قوانین میں ترمیم کی ضرورت ہے ، عمران خان آئندہ اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کریں گے۔انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کا پی اے سی کمیٹی پر موقف غیر اخلاقی ہے ، بھلا نوازشریف کے منصوبوں کا آڈٹ شہباز شریف کیسے کرسکتے ہیں؟اپوزیشن کو کے پی میں قانون ساز پر مسئلہ ہے تو بات کرلے ، وزیر اعظم عمران خان آئندہ اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کریں گے ، اٹھارویں ترمیم میں بہت سے باتیں ہیں جن کوبہتر بنایا جا سکتا ہے ، اس ترمیم کی وجہ سے صحت اورتعلیم کا معیار گراہے ، زرداری صاحب اٹھارویں ترمیم کوایشو بنا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بیورو کریسی تعاون نہیں کرے گی تو انارکی آئے گی ،میرے خیال میں آئی جی اسلام آباد کے معاملے میں اعظم سواتی ٹھیک تھے،یہ دوخاندانوں کے درمیان جھگڑاتھا جسے حل کرلیاگیا ، اس کیس میں جو فیصلہ سپریم کورٹ کی جانب سے آئے گا ، اس کوقبول کریں گے۔

فواد چوہدری

مزید :

صفحہ اول -