برآمد کنندگان کی غیرضروری پرتعیش اشیاء‘ پھلوں کی درآمد پرپابندی کی اپیل

برآمد کنندگان کی غیرضروری پرتعیش اشیاء‘ پھلوں کی درآمد پرپابندی کی اپیل

  

اسلام آباد (اے پی پی)پھلوں کے برآمد کنندگان نے تجارتی خسارے پرقابو پانے کے ضمن میں غیرضروری پرتعیش اشیاء بشمول غیرملکی پھلوں کی درآمدات پرپابندی عائد کرنے کی اپیل کی ہے۔معروف ہارٹیکلچرسٹ اورایف پی سی سی آئی کی علاقائی ایکسپورٹ کمیٹی کے چئیرمین احمد جوادنے اے پی پی کوبتایا کہ پاکستانی مارکیٹ میں مختلف اقسام کے غیرملکی پھل اورسبزیاں کسی چیک کے بغیر آچکی ہیں اورصارفین صرف ان کی ظاہری چمک دمک سے متاثر ہوکرانہیں خرید رہے ہیں، زیادہ تر متمول طبقہ ان اشیاء کی خریداری کررہاہے۔انہوں نے کہاکہ درحقیقت پاکستان خود پھلوں اورسبزیوں میں خودکفیل ہے اوریہاں کے پھلوں کا منفرد ذائقہ درآمد شدہ پھلوں اورسبزیوں میں نہیں ملتا،درآمد شدہ پھل اورسبزیوں کی قیمت بھی زیادہ ہوتی ہے،اس صورتحال کے تناظر میں مقامی پھلوں اورسبزیوں کے شعبہ میں سرمایہ کاری اشدضروری ہے بالخصوص پیداوارسے لے کر پیکنگ تک کے عمل میں سرمایہ کاری پر توجہ دینا ہوگی۔انہوں نے کہاکہ پاکستانی پھلوں اورسبزیوں کی برآمد میں اضافے کیلئے بھی اقدامات ہونے چاہئیں کیونکہ اس سے زرمبادلہ میں اضافہ اورتجارتی خسارے پرقابوپانے میں مدد ملے گی،اس مقصد کیلئے عزم اورنیک نیتی کی ضرورت ہے۔ پھلوں اورسبزیوں کی برآمدات پر 10 فیصد فریٹ سبسڈی دینے سے پاکستانی برآمد کنندگان کو مسابقتی ماحول میں آگے بڑھنے کے مواقع دستیاب ہوں گے۔

مزید :

کامرس -