ایک کڑوڑ 50لاکھ ووٹرز کو ان کے مستقبل پتے پر درج کیے جانے کا امکان

ایک کڑوڑ 50لاکھ ووٹرز کو ان کے مستقبل پتے پر درج کیے جانے کا امکان

  

اسلام آباد (این این آئی)الیکشن کمیشن آف پاکستان نے قومی شناختی کارڈ پر درج پتے کے علاوہ کسی اور پتے پر رجسٹر شدہ ایک کروڑ 50 لاکھ ووٹرز کو ان کے مستقل پتوں پر رجسٹر کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ای سی پی کے مطابق جو ووٹرز 31 دسمبر تک اپنے ووٹ کی رجسٹریشن سے متعلق فیصلہ کرنے میں ناکام رہیں گے انہیں شناختی کارڈ پر درج مستقل پتوں پر رجسٹر کردیا جائے گا۔ نجی ٹی وی کے مطابق ایک سینئر ای سی پی عہدیدار نے بتایا ڈیڈ لائن ختم ہونے کے بعد کسی تیسرے پتے پر رجسٹر شدہ ووٹرز کو ان کے شناختی کارڈ پر درج مستقل پتے پر رجسٹر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔الیکشن ایکٹ کی شق نمبر 27 کے مطابق کسی شخص کے شناختی کارڈ پر درج عارضی یا مستقل پتہ اس انتخابی علاقے کی حدود میں آتا ہے اس انتخابی علاقے کا رہائشی مانا جائیگا۔انہوں نے کہا تھا کہ وہ افراد جو سرکاری ملازمت کے دوران عارضی طور پر کسی علاقے میں رہائش پذیر ہیں وہ انتخابی علاقے میں اندراج کروانے کیلئے رجسٹریشن افسر سے رابطہ کرسکتے ہیں، یہ سہولت ان کے اہلِ خانہ کیلئے بھی موجود ہے۔الیکشن ایکٹ کی شق 27 کی ذیلی شق 4 کے مطابق ’کسی ووٹر کی رجسٹریشن قومی شناختی کارڈ میں درج عارضی یا مستقل پتے کے علاوہ کسی اور پتے پر اس وقت تک قائم رہے گی جب تک وہ اپنے ووٹ کی منتقلی یا نئے قومی شناختی کارڈ کیلئے درخواست نہیں دیتا جس کے مطابق اس کا ووٹ قومی شناختی کارڈ میں درج مستقل یا عارضی پتے پر منتقل ہوجائیگا۔مذکورہ ذیلی شق میں درج شرائط کے مطابق ذیلی شق نمبر 4 اور اس شرط کو 31 دسمبر 2018 کے بعد خارج کردیا جائیگا۔31 دسمبر کے بعد ضلعی الیکشن کمشنرز اپنے علاقوں میں موجود ایسے ووٹرز کی فہرست بنائیں گے جنہیں بھیجے جانے والے نوٹس میں ان کے شناختی کارڈ پر درج کیے گئے مستقل پتے پر رجسٹر کرنے سے متعلق بتایا جائے گا۔ای سی پی عہدیدار نے بتایا کہ کسی اور پتے پر رجسٹر ووٹرز کو ان کے مستقل پتے پر رجسٹر کرنے کا عمل 31 مارچ 2019 تک مکمل کرلیا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ قومی اور صوبائی اسمبلیوں کو بھی اپنے ووٹرز کو اس حوالے سے آگاہ کرنے کا کہا گیا تھا۔

ووٹرز امکان

مزید :

علاقائی -