فروعی اختلافات عالم اسلام کی ترقی میں بڑی رکاوٹ‘معین الدین محبوب کوریجہ 

فروعی اختلافات عالم اسلام کی ترقی میں بڑی رکاوٹ‘معین الدین محبوب کوریجہ 

  



 مٹھن کوٹ(نمائندہ خصوصی‘نامہ نگار)وقت کا تقاضا ہے کہ تمام مسلکی اختلافات کو پس پشت ڈال کر امت مسلمہ کو درپیش چیلنجز کا مقابلہ کیا جائے۔فروعی اختلافات عالم اسلام کی ترقی میں ایک بڑی رکاوٹ کے طورپر سامنے آئے ہیں ان خیالات کا اظہار سجادہ نشین مزار فریدؒخواجہ معین الدین محبوب کوریجہ نے عظیم صوفی شاعر وروحانی بزرگ حضرت خواجہ غلام فرید سائیں کے 122ویں عرس کے موقع پرپاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے (بقیہ نمبر41صفحہ7پر)

کیا اس موقع  پر ولی عہد مزار فریدؒخواجہ راول معین کوریجہ اور خواجہ علی معین کوریجہ بھی موجود تھے انہوں مزید کہا کہ اب وقت ہے کہ موجودہ دورکے تقاضوں کو محسوس کرتے ہوئے مشترکہ افکار اور اقدارکو مشعل راہ بنا کر امت کو اتحاد کے راستے پر لایاجائے۔جن لوگوں نے شدت پسندی کے ساتھ اسلام کے دین امن کے تصور کو داغ دار کیاہے انہوں نے اسلام کے نام پر کفر کی مددکی ہے۔اب وقت آگیاہے کہ شدت پسندی کے چہرے سے نقاب اتاراجائے اورنبی رحمت جو پیغام کائنات کی سلامتی کیلئے لائے تھے عالم انسانیت کے سامنے اسے اس کی اصل شکل میں دنیا کے سامنے لایاجائے۔ انہو ں نے کہا کہ اولیا ء کرا م نے بر صغیر پا ک وہند میں اپنے اچھے عمل،قول،اقرار، محبت اور خد مت کے جذ بے سے ہمیشہ اسلام اور انسا نیت کی خد مت کی اور ان کی زند گیاں اللہ اور پیا رے رسولؐ کی اطاعت میں گزریں  صدیو ں بعد بھی ان کے مزارا ت فیض وبرکت،امن کا مر کز اور لوگون کے لئے سرچشمہ ہدا  یت ہیں  صو فیا کرا م میں حضرت خوا جہ غلام فرید ؒسا ئیں کا بہت بڑا مقا م ہے اور ان کی صوفیا نہ شا عری و آفا قی کلام سے رہنما ئی حا صل کر نے کی ضرورت ہے۔

محبوب کوریجہ 

مزید : ملتان صفحہ آخر