پاکستان میں پہلی بار دمہ کی یقینی تشخیصFenoمشین کے ذریعے ممکن

  پاکستان میں پہلی بار دمہ کی یقینی تشخیصFenoمشین کے ذریعے ممکن

  



ملتان ( وقا ئع نگار) پاکستان میں پہلی بار دمہ کی یقینی تشخیص فینوfenoمشین کے زریعے ممکن ہوگی اور پاکستان میں (fot)مشین کے ذریعے پانچ سال سے چھوٹے بچوں کے پھپھڑوں کا ٹیسٹ کرنا بھی ممکن ہوگا ان خیالات کا اظہارانسٹی ٹیوٹ آف مدراینڈچائلڈ کیئر میں فینو اور fot مشینوں (بقیہ نمبر48صفحہ12پر)

کے افتتاحی تقریب سے فلاحی تنظیم سے پروفیسر غلام مصطفے نے کیا انہوں نے مزید کہا کہ ابھی تک دمہ سے متاثرہ مریض کی دمے کی جڑ اور بنیادی سوزش کی موجودگی اور مقدار نہیں دیکھ سکتے feno اور fot مشینوں کے افتتاح سے ممکن ہو گیا ہے۔مشین کا فائدہ یہ ہے کہ اس سے سوزش کی مقدار کا تعین ہو جائے گااور ڈاکٹر کو علاج کییلئے آسانی پیدا ہوگی۔مریض کی غیر ضروری ادویات سے جان چھوٹے گی۔دوسری مشین fot سے کم عمر بچوں کے پھیھڑوں کے ٹیسٹ ممکن ہو سکیں گے اب تک پاکستان میں موجود مشینیں صرف پانچ سال سے بڑے ایسے بچے جو سمجھدار ہوں اور مشین کی نالی میں پھونک مارسکیں۔مشین اسکا ٹیسٹ کر سکتی ہے۔مشینوں کے افتتاح پر ہیلپنگ ہینڈ فاونڈیشن کے ڈائریکٹر شیخ فیصل سعید۔شیخ عدنان۔محمود سلیم اعجاز شاہ ڈاکٹر عرفان ڈاکٹر زہرہ ڈاکٹر ثانیہ صائمہ چشتی حیدر علی۔یاسر لودھی ودیگر بھی موجود تھے۔

ممکن

مزید : ملتان صفحہ آخر