حکومت مقبوضہ کشمیر کی آزادی کیلئے نیشنل ایکشن پلان کا اعلان کرے: سراج الحق 

  حکومت مقبوضہ کشمیر کی آزادی کیلئے نیشنل ایکشن پلان کا اعلان کرے: سراج الحق 

  



ٍ  اسلام آباد(آئی این پی) امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک میں کشمیر کے حق میں حکمرانوں کے ضمیر کو جگانے کیلئے 22 دسمبر کو وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں ملین مارچ ہو گا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت نیشنل(بقیہ نمبر45صفحہ12پر)

 ایکشن پلان برائے آزادی کشمیر دے، کشمیر پر پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلا کر روڈ میپ دیا جائے اپوزیشن کو ساتھ لے کرعالمی مہم کا آغاز کرے اور سیز فائرلائن کو ختم کیا جائے۔ حکومت کو کشمیر پر جمعہ جمعہ کا احتجاج بھی بھول گیا ہے وزرا کو کشمیر کا سوال کریں تو ناراضگی محسوس کرتے ہیں عملی اقدامات نہ کئے گئے بائیس دسمبر کو اگلے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔ پاکستان بھارت کے ساتھ شملہ و لاہور معاہدے توڑ دے پیر کے روز جماعت اسلامی کے دفتر اسلام آباد میں امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ کشمیریوں کو مسلح جدوجہد کا حق دیتا ہے اور اب عالمی برادری بھارت پر پابندیاں لگائے او آئی سی معاشی مفادات کی بجائے ایمانی غیرت کو ترجیح دے اب تو حکومت کو کشمیر پر جمعہ جمعہ کا احتجاج بھی بھول گیا ہے وزرا کو کشمیر کا سوال کریں تو ناراضگی محسوس کرتے ہیں عملی اقدامات نہ کئے گئے بائیس دسمبر کو اگلے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔ پاکستان بھارت کے ساتھ شملہ و لاہور معاہدے توڑ دے۔ سیز فائز لائن کی طرف مارچ کرنے والوں کو غدار کہا جارہا ہے۔ بائیس دسمبر کو چاروں صوبوں اور آزاد کشمیر سے لاکھوں لوگ سوئے ہوئے حکمرانوں کو کشمیر پر جگانے کے لئے اسلام آباد آئیں گے، وزیر اعظم کی کشمیر پر پراسرار خاموشی توڑیں گے، مودی گلگت بلتستان پر قبضہ اور پاکستان کا پانی مکمل بند کرنے کے پلان پر عمل پیرا ہے، ایک لاکھ 4 ہزار 390 مربع کلو میٹر پر مشتمل علاقہ بھارت نے بغیر جنگ کے قبضے میں لے لیا اور ہم تماشہ دیکھتے رہے اور بھارتی فوج نے پورا فائدہ اٹھایا جبکہ ہمیں لائن آف کنٹرول پر مصروف رکھ کر بھارت نے کشمیر ہڑپ کرلیا۔ وزیراعظم پراسرار طور پر خاموش ہیں اور عملی اقدام کی بجائے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کی جانب جانے والوں کو غدار قرار دے دیا گیاوزیراعظم کے اس‘فتویٰ’سے کشمیریوں کو مایوسی ہوئی۔انہوں نے کہا کہ عالمی اداروں کے بقول 13 ہزار کشمیری لڑکیوں سے زیادتی کی گئی ہے جبکہ مقبوضہ وادی میں عصمت دردی کو ہتھیار کے طور پر استعمال کیا جارہا ہے۔

سراج الحق

مزید : ملتان صفحہ آخر