آصف زرداری کو اپنے صوبے میں علاج کا حق ملنا چاہیے‘ افتخار خان

  آصف زرداری کو اپنے صوبے میں علاج کا حق ملنا چاہیے‘ افتخار خان

  



مظفرگڑھ (نامہ نگار)پیپلزپارٹی جنوبی پنجاب کے انفارمیشن سیکرٹری و رکن قومی اسمبلی نوابزادہ افتخار احمد خان نے اپنی رہائش گاہ سیف نگر خانگڑھ میں ایک ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے(بقیہ نمبر12صفحہ12پر)

کہا ہے کہ سابق صدر آصف علی زرداری کی طبیعت انتہائی ناساز ہے سرکاری ڈاکٹروں کے بورڈ نے فوری طور پر دل کے آپریشن کی تجویز دی ہے۔ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بھی اس بات حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ سرکاری ڈاکٹروں کی رپورٹ ان کے خاندان کو فراہم کی جائے تاکہ رائے لی جا سکے۔ سابق صدر کی تشویش ناکطبعی صورتحال کے پیش نظر آصفہ بھٹو زرداری اور بختاور بھٹو زرداری بھی اسلام آباد پہنچ گئی ہیں جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی حکومت سے مطالبہ کرتی ہے کہ سابق صدر جن کو صرف الزام کی بنا پر حکومت نے حبس بے جا میں رکھا ہوا ہے 6 ماہ گزرجانے کے باوجود نہ ہی کوئی فرد جرم عائد کی گئی ہے اور نہ ہی FIR درج ہے حکومت صرف انتقام کی آگ میں اس قدر اندھی ہو چکی ہے کہ ان کے ذاتی معالج تک رسائی اور ان کے خاندان کو ڈاکٹروں کی رپورٹ فراہم نہیں کر رہی۔ پاکستان پیپلز پارٹی حکومت سے کوئی رعایت نہیں مانگتی مگر جو سابق صدر کے بنیادی انسانی حقوق ہیں وہ اس کا حق چاہتی ہے۔ سابق صدر نے اپنے وکلا اور اپنے بچوں کے بار بار زور کے باوجود بھی ضمانت کی درخواست دینے سے انکار کر دیا ہے ان کا موقف ہے یا حکومت جرم ثابت کرے یا معافی مانگے انہوں نے ملک سے باہر علاج کی تجویز کو بھی مسترد کر دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ تمام پاکستانیوں کے لیے ایک قانون ہو بڑے صوبے کیلئے اور چھوٹے صوبوں کے لیے اور کا قانون ناانصافی کے مترادف ہے اس سے چھوٹے صوبوں میں احساس محرومی پیدا ہو گا۔ سابق صدر کو ذاتی معالج تک رسائی اور اپنے صوبے میں علاج کا حق ملنا چاہیے اس موقع پر ملک نعیم حسن جھانب' مہرشاکر سیال ' شیخ کامران ساغر سمیت دیگر کارکنان بھی موجود تھے

افتخار خان

مزید : ملتان صفحہ آخر