ناروے،سیکڑوں مسلمانوں کی کھلے آسما تلے قرآن خوانی

    ناروے،سیکڑوں مسلمانوں کی کھلے آسما تلے قرآن خوانی

  



اوسلو(آئی این پی)ناروے کی انتہائی سخت سردی میں کھلے آسمان تلے سینکڑوں مسلمانوں نے قرآن کی تلاوت کر کے کلام الٰہی سے اپنی عقیدت کا اظہار کیا۔ناروے کے دارالحکومت اوسلو میں گزشتہ روز  سینکڑوں مسلمان جن میں اکثر نارویجن پاکستانی تھے، کھلے آسمان تلے جمع ہوئے اور پورا ایک گھنٹہ سور ۃیاسین کی تلاوت کرکے قرآن کریم سے اپنی عقیدت اور وابستگی کا اظہار کیا۔یہ اجتماع اوسلو کے علاقے گرورود کے فٹ بال گراونڈ میں منفی آٹھ درجے سینٹی گریڈ انتہائی سرد موسم میں منعقد ہوا جس کی نظامت کے فرائض جامعہ باب العلم آستانہ عالیہ آل رسول اوسلو کے مہتمم مولانا سید فراست علی بخاری نے سرانجام دیئے۔اس تقریب میں گرورود گرجا گھر کی خاتون پادریہ مس انے بریت ایوانگ نے خصوصی طور پر شریک ہو کر مسلمانوں سے یکجہتی کا اظہار کیا۔ ناروے میں پاکستانی سفیر ظہیر پرویز خان نے کہاہے کہ ہم نارویجن لوگوں کے شکرگزار ہیں جنہوں نے دکھ کے اس موقع پر مسلمانوں سے یکجہتی کا اظہار کیا ہے، وہ گز شتہ روز اوسلو میں اسلام آباد، راولپنڈی ویلفیئرسوسائٹی کے زیراہتمام سوسائٹی کے سابق صدر مرزا محمد ذوالفقار مرحوم کی یاد میں تعزیتی ریفرنس سے خطاب کررہے تھے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان نے قرآن کریم کی بے حرمتی کے خلاف بھرپور آواز اٹھائی ہے، اسلام آباد میں ناروے کے سفیر کو پاکستان کی تشویش سے آگاہ کیا گیا اور یہاں ناروے میں ہم نے نارویجن حکومت کو بھی اس بارے میں اپنے واضح موقف سے مطلع کیا۔سفیر پاکستان نے کہاکہ ایسی آزادی اظہار رائے نہیں ہونی چاہیے جس سے لوگوں کے جذبات مجروح ہوں اور انہیں دکھ پہنچے، اس واقعے سے ایک عشاریہ تین ارب مسلمانوں کو انتہائی دکھ اور صدمہ پہنچا ہے۔انہوں نے یہ بھی کہاکہ ہم مسلمان ایک پرامن مذہب کے ماننے والے ہیں اور ایسے مواقع پر ہمیں انتہائی تدبر اور سمجھداری سے کام لینا ہوگا۔

مزید : صفحہ آخر