پنجاب، ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام، صوبائی وزیر صحت کا نکمے افسران کو ہٹانے کا حکم 

پنجاب، ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام، صوبائی وزیر صحت کا نکمے افسران کو ہٹانے کا ...

  



لاہور(جنرل رپورٹر) صوبائی وزیرصحت ڈاکٹر یاسمین راشدنے پنجاب ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام کوایس اوپی کیخلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کاحکم دے دیا۔ صوبائی وزیرصحت نے یہ حکم محکمہ پرائمری اینڈسیکنڈری ہیلتھ کئیرمیں پنجاب ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام، پنجاب ٹی بی کنٹرول پروگرام اورپنجاب ایڈزکنٹرول پروگرام کی کارکردگی کاجائزہ لینے کیلئے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے دیا۔اس موقع پرسپیشل سیکرٹری محکمہ پرائمری اینڈسیکنڈری ہیلتھ کئیراجمل بھٹی، پروگرام منیجرپنجاب ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام ڈاکٹرخالدمحمود، رانااقبال، پروگرام منیجرپنجاب ٹی بی کنٹرول پروگرام ڈاکٹرعامرنذیر، پروگرام منیجرپنجاب ایڈزکنٹرول پروگرام ڈاکٹرمنیر اورڈاکٹرفرحان نے اجلاس میں شرکت کی۔ وزیرصحت پنجاب نے سپیشل سیکرٹری اجمل بھٹی کوکام نہ کرنے والے افسران کوہٹانے کاحکم دے دیا۔صوبائی وزیر صحت نے مزید کہاکہ پنجاب میں ایک سواکیس کلینکس کے ذریعے ہیپاٹائٹس کے مریضوں کوٹیسٹوں، ادویات اورعلاج معالجہ کی مفت سہولت فراہم کی جارہی ہے۔ ایس اوپی کی خلاف ورزی کرنے والے حجام اوربیوٹی پارلرزکے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے۔پنجاب کے ہوٹلوں میں ملازمین کو سکریننگ کے بغیرکام کی اجازت نہ دینے پرزوردیاجائے اور خون سے ہیپاٹائٹس کو پھیلنے سے بچانے کیلئے بلڈبنکس کومسلسل مانیٹرکیاجائے۔صوبائی وزیر صحت نے سپیشل سیکرٹری اجمل بھٹی کو حکم دیا کہ وہ ہرمہینے خودتمام ورٹیکل پروگرامز کی سرگرمیوں اورکارکردگی کاجائزہ لیں۔ وزیرصحت سے محکمہ سپیشلائزڈہیلتھ کئیراینڈمیڈیکل ایجوکیشن میں ایسوسی ایشن آف پاکستانی فزیشنزآف نادرن یورپ کے تین رکنی وفدنے ملاقات کی۔ تین رکنی وفدنے صوبائی وزیرصحت ڈاکٹریاسمین راشدکونادرن یورپ میں فراہم کی جانے والی طبی خدمات بارے تفصیلات سے آگاہ کیا۔وفدنے وزیرصحت کوصحت کے شعبہ میں مزیدبہتری کیلئے اہم تجاویزبھی پیش کیں۔ صوبائی وزیر صحت ڈاکٹریاسمین راشد نے کہاکہ پاکستانی ڈاکٹرزپوری دنیامیں بہترین خدمات سرانجام دے کرملک کانام روشن کررہے ہیں۔ پنجاب کے سرکاری ہسپتالوں میں مریضوں کیلئے آسانیاں پیداکی جارہی ہیں۔ تربیتی ورکشاپس میں ایسوسی ایشن آف پاکستانی فزیشنزآف نادرن یورپ کے ماہرین سے استفادہ کیاجائے گا۔

یاسمین راشد

مزید : صفحہ آخر