پانی اور ماحولیاتی آلودگی کمیشن کی لاہور چیمبرآف کامرس میں آمد

پانی اور ماحولیاتی آلودگی کمیشن کی لاہور چیمبرآف کامرس میں آمد

  



 لاہور (آن لائن) جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر شاہد کریم نے پانی کے تحفظ کے لئے ضروری اقدامات اٹھانے کے حوالے سے (ر)  جسٹس علی اکبر قریشی کی زیر نگرانی ایک جوڈیشل کمیشن تشکیل دیا۔ اس کمیشن کے 

بنیادی مقاصد میں پانی کے ذخائر کا نظم و نسق، پانی کا تحفظ، غیر محصول والے پانی سے محصول کمانا اور پانی کی چوری روکنا جیسے اہم امور شامل ہیں۔یہ کمیشن ہر ہفتے متعلقہ محکموں کی جانچ اور پانی کے تحفظ وغیرہ کا جائزہ لینے کے لئے اجلاس منعقد کر رہا ہے۔ اسی سلسلے میں پانی اور ماحولیاتی آلودگی کمیشن نے جسٹس علی اکبر کی سربراہی میں لاہور چیمبر آف کامرس کا دورہ کیا اور انڈسٹری سے وابستہ نمائندگان سے تفصیلی ملاقات کے دوران فضائی آلودگی کی روک تھام اور چیزوں کو خشک کرنے کیلئے جدید مشینری کی تنصیب اور پانی کے ضیاع سے بچنے کیلئے ویسٹ ٹریٹمنٹ پلانٹس کی تنصیبی جیسے اہم امور پر زور دیا جبکہ کمیشن کی طرف سے واضح ہدایت جاری کی گئیں کہ فوری طور پر گندے پانی کے انخلاع کو روکا جائے بصورت دیگر 25 دسمبر سے صنعتی یونٹس کو سیل کرنے کا ایک سخت آپریشن شروع کردیا جائے گا

 اور عدم تعمیل کی صورت میں کمیشن بھاری جرمانے اور فیکٹریوں وغیرہ کو مستقل طور پر بند کرنے کی مجاذ ہوگی۔انوارٹمنٹ پروٹیکشن ایجنسی کے نمائندہ اور فوکل پرسن اعجازنے مشورہ دیا کہ صوبہ بھر میں انڈسٹری کو پنجاب کے ماحولیاتی معیار کے مطابق فضائی آلودگی کنٹرول سسٹم اور پانی کے بہاؤ والے ٹریٹمنٹ پلانٹ لگا نے سے ماحولیاتی آلودگی سے بچا جا سکتا ہے۔ کمیشن نے لیگل کونسل آف کمیشن سید کمال حیدر کو ہدایت کی کہ وہ اجلاس میں زیربحث امور سے متعلق تفصیلی رپورٹ لاہور ہائیکورٹ کو پیش کریں #/s#

مزید : کامرس