ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن احتجاجاً مستعفی

  ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن احتجاجاً مستعفی

  



 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی ) ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن نے احتجاجاً ملازمت سے استعفیٰ دے دیا، بشیر میمن نے استعفیٰ سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ کو بھجوا دیا جس میں کہا گیا ہے کہ سرکاری افسر کی ریٹائرمنٹ کے نزدیک تبادلہ کرنا آداب کی خلاف ورزی ہے، ریٹائرمنٹ سے چند روز قبل تبادلہ کرنے کا مطلب حکومت مجھ سے خوش نہیں،  لہذا حکومتی فیصلے کے پیش نظر میں ملازمت سے استعفیٰ دیتا ہوں۔ذرائع کے مطابق بشیر میمن حکومت سے کچھ ایشوز پر اختلافات کی وجہ سے چھٹی پر چلے گئے تھے جب کہ ان پر حزب اختلاف کے لیڈروں پر مقدمات بنانے کے لیے دباؤ تھا تاہم بشیر میمن نے سیاسی دبا قبول کرنے سے انکار کر دیاتھا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ بشیر میمن 28ستمبر سے چھٹی پر تھے جسے بڑھاتے رہے تاہم گذشتہ پیر کو چھٹی ختم ہونے پر بشیرمیمن نے عہدے کا چارج سنبھال لیاتھا جب کہ بشیر میمن اپنے پنشن کاغذات کی تیاری کے لئے آخری 10دن ڈیوٹی پر آئے۔نجی ٹی وی کے مطابق بشیر میمن نے انہیں عہدہ سے ہٹائے جانے کی بنیاد پر استعفیٰ دیا ہے۔ پولیس سروس کے 22 ویں گریڈ کے افسر بشیر میمن کو ڈی جی ایف آئی اے کے عہدے سے ہٹایا گیا تھا، ان کی جگہ پاناما جے آئی ٹی کی سربراہی کرنے والے واجد ضیاء کو ایف آئی اے کا سربراہ مقرر کیا گیا تھا۔قریبی ذرائع نے بتایا ہے کہ بشیر میمن نے حکومتی فیصلے پر احتجاجاٍ استعفیٰ دیا، ان کا موقف ہے کہ انہوں نے 35 سال تک ملک و قوم کی خدمت کی انہیں ان کی ریٹائرمنٹ سے محض 10 روز قبل عہدے سے ہٹا دیا گیا، حکومت نے ان کی خدمات کو نظرانداز کیا اور دس دن بھی برداشت نہیں کر سکی۔واضح رہے کہ بشیر میمن نے 16 دسمبر کو اپنی مدت ملازمت پوری ہونے پر ریٹائر ہونا تھا۔

بشیر میمن مستعفی

مزید : صفحہ اول