کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ختم، چار ماہ میں پاکستانی سٹاک انڈیکس 40فیصد بڑھا، کریڈٹ ریٹنگ منفی سے مستحکم ہو گئی، موڈیز، معاشی اصلاحاتی ایجنڈے پر گامزن ہیں: حفیظ شیخ

  کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ختم، چار ماہ میں پاکستانی سٹاک انڈیکس 40فیصد بڑھا، کریڈٹ ...

  



واشنگٹن(اظہر زمان، بیوروچیف) گزشتہ چار سال کے عرصے میں پہلی مرتبہ پاکستان کا موجودہ اکاؤنٹ خسارے سے نکل کر اضافی ہوا ہے اور چار ماہ سے کم عرصے میں اس کے سٹاک انڈیکس میں چالیس فیصد اضافہ ہوا ہے۔ معیشتوں کی درجہ بندی کرنیوالے امریکی ادارے موڈیز نے پاکستان کی کریڈٹ ریٹنگ بہتر کرتے ہوئے معاشی آؤٹ لْک کو منفی سے مستحکم کر دیا۔موڈیز کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق پاکستان کی ریٹنگ بی تھری پر برقرار رکھی ہے تاہم پہلے مستقبل یعنی آؤٹ لْک منفی تھا جسے اب موڈیز نے مستحکم کردیا ہے۔رپورٹ کے مطابق ادائیگیوں کا توازن مزید بہتر ہونے کے پیش نظر آؤٹ لْک بہتر کیا گیا۔موڈیز کے مطابق اگرچہ زرمبادلہ کے ذخائر اب بھی کم ہیں اور انہیں بہتر ہونے میں وقت لگے گا مگر پالیسی ایڈجسٹمنٹ اور آزادانہ شرح مبادلہ سے ادائیگیوں کے توازن کی بہتری میں مدد ملے گی۔گزشتہ چار سال کے عرصے میں پہلی مرتبہ پاکستان کا موجودہ اکاؤنٹنٹ خسارے سے نکل کر اضافی ہوا ہے اور چار ماہ سے کم عرصے میں اس کے سٹاک انڈیکس میں چالیس فیصد اضافہ ہوا ہے۔ یہ تازہ ترین جائزہ واشنگٹن کے معتبر ادارے ”موڈیز انوسٹرز سروس“ کی طرف سے پیش کیا گیا ہے۔ جائزے میں مزید بتایا گیا ہے کہ موجودہ اور آئندہ مالی سال میں کرنٹ اکاؤنٹ کا خسارہ کم ہو کر اوسطاً جی ڈی پی کے 2.2 فیصد تک پہنچ جائے گا جبکہ گزشتہ برس یہ خسارہ جی ڈی پی کا 5 فیصد تھا۔

موڈیز

اسلام آباد (آن لائن)لمبے عرصے کے بعد سٹاک مارکیٹ میں مثبت رجحان جاری ہے،گزشتہ روزکاروبار کے اختتام پر سٹا ک مارکیٹ دس ماہ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔تفصیلات کے مطابق سٹاک مارکیٹ میں کاروبار کا آغاز ہوا تو 100انڈیکس 39287پوائنٹس کی سطح پر تھا تاہم پورا د ن مثبت رجحان رہا اور کاروبار کے اختتام پر 836پوائنٹس کے اضافے کیساتھ 40ہزار کی نفسیاتی حد عبور کرتے ہوئے 40124پوائنٹس پر پہنچ گیا۔سٹاک مارکیٹ میں حصص کی مالیت میں 110ارب روپے اضافہ دیکھنے میں آیا۔دوسری جانب کاروبار کے اختتام پر انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں 4پیسے اضافہ ہوا جس کے بعد ڈالر 155.27روپے پر بند ہو اجبکہ دوسری جانب اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں 20پیسے کمی واقع ہوئی جس کے بعد ڈالر 155.40روپے پر فروخت ہو تا رہا۔دوسری طرف مشیر خزانہ حفیظ شیخ نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ موڈیز نے پاکستان کا معاشی آؤٹ لک منفی سے بدل کر مستحکم کیا،مشیر خزانہ کا کہنا تھا کہ معاشی آؤٹ لک میں بہتری ملکی معیشت کو سنبھالنے اور مستحکم بنانے کی حکومتی کوششوں پراعتماد کا اظہار ہے۔ حکومت معاشی اصلاحات کے ایجنڈا پر گامزن رہے گی، مستقبل میں تیزتر، پائیدار اور یکساں معاشی ترقی کو مضبوط بنیادوں پراستوار کریں گے۔

ڈالر،سٹاک مارکیٹ

مزید : صفحہ اول