شرح سود زیادہ ہونے سے صنعتی شعبہ مشکلات کا شکار ہے،سعدیہ تیمور

شرح سود زیادہ ہونے سے صنعتی شعبہ مشکلات کا شکار ہے،سعدیہ تیمور

  



لاہور (آن لائن) مسلم لیگ (ن) کی رکن پنجاب اسمبلی سعدیہ تیمور نے کہا ہے کہ سٹیٹ بینک آف پاکستان کو اس حقیقت کا ادراک ہونا چاہیے کہ مارک اپ کی شرح خطے کے دیگر ممالک کی نسبت پہلے ہی بہت زیادہ ہے جس سے صنعتی شعبے کو مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وقت نے یہ ثابت کیا ہے کہ مارک اپ کی زیادہ شرح کی وجہ سے معیشت کو نقصان ہوا ہے۔ اگر زمینی حقائق کو مدنظر رکھتے ہوئے اقدامات نہ اٹھائے گئے تو نہ صرف صنعت اور معیشت کے مسائل مزید بڑھیں گے بلکہ مالی خسارہ بھی بڑھے گا جو کسی طرح بھی ملک کے مفاد میں نہیں۔ انہوں نے کہا کہ سٹیٹ بینک آف پاکستان زمینی حقائق کو مدّنظر رکھتے ہوئے مارک اپ کی شرح سنگل ڈیجٹ کرے۔صنعت، تجارت اور معیشت کے وسیع تر مفاد میں مارک اپ کو سنگل ڈیجٹ تک لائے۔ مارک اپ کی موجودہ شرح 13.25فیصد بہت زیادہ ہے۔

جس کا اثر صنعتوں کی پیداواری لاگت پر پڑ رہا ہے، مارک اپ کی شرح سنگل ڈیجٹ تک آنے سے نہ صرف صنعتوں کو فائدہ ہوگا بلکہ اس کے واضح اثرات برآمدات اور معیشت پر بھی دیکھے جاسکیں گے

مزید : میٹروپولیٹن 1