بھارت کی نوجوان لڑکی فیس بک بوائے فرینڈ سے ملنے کرتار پور راہداری سے گوردوارہ پہنچی اور وہاں آ کر ایسا کام کر دیا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا

بھارت کی نوجوان لڑکی فیس بک بوائے فرینڈ سے ملنے کرتار پور راہداری سے ...
بھارت کی نوجوان لڑکی فیس بک بوائے فرینڈ سے ملنے کرتار پور راہداری سے گوردوارہ پہنچی اور وہاں آ کر ایسا کام کر دیا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستانی حکام نے بھارت سے یاتری کے روپ میں آنے والی نوجوان لڑکی کی پاکستانی علاقے میں داخلے کی کوشش کو ناکام بنا دیاہے ۔

” روزنامہ جنگ “ کی رپورٹ کے مطابق اس واقعے کے بعد پورے علاقے میں سیکیورٹی مزید سخت کر دی گئی ہے اور پاکستانی وزیٹرز کے لیے گوردوارہ سے واپسی پر بھی بائیومیٹرک لازمی قرار دے دی گئی۔ 23 نومبر کو ہریانہ سے تعلق رکھنے والی سکھ لڑکی منجیت کوریاتری کے روپ میں اپنے پاکستانی فیس بک بوائے فرینڈ سے ملنے کے لیے راہداری کے ذریعے گوردوارہ پہنچی جہاں فیصل آباد سے آیاہوا اس کا بوائے فرینڈ اپنے ایک دوست اور ایک پاکستانی لڑکی کے ساتھ موجود تھا۔

ان چاروں نے گوردوارہ کی پہلی منزل پر جا کر ملاقات کی۔ ملاقات میں سکھ یاتری منجیت کور نے راہداری سے واپس جانے کی بجائے پاکستانی علاقے میں جانے کا منصوبہ بنایا۔ذرائع کے مطابق سکھ لڑکی کے بوائے فرینڈ کے ہمراہ آنے والی پاکستانی لڑکی نے اپنا وزیٹر کارڈ بھارتی سکھ لڑکی کو دے دیا اور اس یاتری کارڈ گوردوارے کے ایک کوڑے دان میں پھینک دیا۔

مزید : قومی