وزیر اعظم اپوزیشن کے ساتھ بات کرنے کو تیار نہیں، خواجہ آصف نے حکومت کے ساتھ چیف الیکشن کمشنر تقرری کے معاملے پر ڈیڈلاک کی وضاحت کردی

وزیر اعظم اپوزیشن کے ساتھ بات کرنے کو تیار نہیں، خواجہ آصف نے حکومت کے ساتھ ...
وزیر اعظم اپوزیشن کے ساتھ بات کرنے کو تیار نہیں، خواجہ آصف نے حکومت کے ساتھ چیف الیکشن کمشنر تقرری کے معاملے پر ڈیڈلاک کی وضاحت کردی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف نے کہاہے کہ حکومت کے ساتھ الیکشن کمیشن کے معاملے پر سوفیصد ڈیڈلاک ہے، وزیر اعظم اپوزیشن کے ساتھ بات کرنے کو تیار نہیں ہیں۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”دنیا کامران خان کے ساتھ“میں گفتگو کرتے ہوئے خواجہ آصف نے کہا کہ حکومت کے ساتھ الیکشن کمیشن کے معاملے پر سوفیصد ڈیڈلاک ہے، چیف الیکشن کمشنر کے سلسلے میں ہم نے ناصر کھوسہ کانام دیاہے ، ناصر کھوسہ کا نام تحریک انصاف نے نگران وزیر اعلیٰ کیلئے بھی دیا تھا ۔ایسے لوگ دباﺅ کا سامنا کرسکتے ہیں خواہ حکومت ہی ان کا تقرر کرے ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری طرف سے حکومت کو جو نام دیئے گئے ہیں ان پر حکومت کی طرف سے کوئی جواب نہیں دیاگیا ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان اس وقت بھی اپوزیشن سے بات کرنے کیلئے تیار نہیں ہیں تو ایسے ماحول میں چیف الیکشن کمشنر کا کیا تقرر ہوگا ؟ مشاورت نہ ہوئی تو یہ معاملہ لٹک جائے گا ۔

خواجہ آصف کا کہنا تھاکہ آرمی ایکٹ کے حوالے سے جب مسودہ آئے گاتو پھر دیکھاجائے گا ، ان لوگوں نے قوم کو خجل کیا ہے اوراب جب مسودہ آئے گا تو پتہ نہیںاس میں کیاکیا غلطیاں کی ہونگی ؟ انہوں نے کہا کہ حکومت کے جو لوگ ہمارے ساتھ بات کرتے ہیں میں ان کا احترام کرتا ہوں لیکن ان کے پاس طاقت ہی نہیں ہیں، وہ بات کرتے ہیں لیکن ان پر عمل در آمد ہی نہیں ہوتا کیونکہ طاقت تو ساری فرد واحد نے اپنے پاس رکھی ہوئی ہے ۔

مزید : قومی