سٹیٹ بینک اب سے مانیٹری پالیسی ڈیڑھ ماہ بعد دیا کرے گا : شوکت ترین

سٹیٹ بینک اب سے مانیٹری پالیسی ڈیڑھ ماہ بعد دیا کرے گا : شوکت ترین
 سٹیٹ بینک اب سے مانیٹری پالیسی ڈیڑھ ماہ بعد دیا کرے گا : شوکت ترین

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن ) مشیر خزانہ شوکت ترین نے کہاہے کہ گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے ، ہماری کوشش ہے کہ جتنی ہو سکے سبسڈی دیں، ڈومیسٹک انفلیشن میں اصل میں کمی ہوئی ہے ، عالمی سطح پر مہنگائی ہوئی ہے ، امپورٹڈ چیزوں کی قیمتوں میں اضافہ ہواہے ۔

مشیر خزانہ شوکت ترین نے کہاہے کہ سٹیٹ بینک اب سے مانیٹری پالیسی ڈیڑھ ماہ بعد دیا کرے گا ، عالمی سطح پر مہنگائی بڑھ رہی ہے ، مہنگائی اور امپورٹ بل کا مرض ایک ہی ہے ۔ فیول ،ایل این جی سمیت دیگر امپورٹڈ چیزیں مہنگی ہوئیں ، امپورٹڈ چیزوں کی قیمتوں میں اضافہ ہواہے ، باقی چیزیں پٹرولیم مصنوعات بڑھنے کی وجہ سے مہنگی ہیں ۔

ان کا کہناتھا کہ ڈسکاﺅنٹ ریٹ بڑھا کر 8.45 کیا گیاہے ، ایکسپورٹس 2.5 سے 3.5 فیصد پر چلی گئیں ، امپورٹس 7.7 بلین ڈالر ہونے کی خبر آئی تو کہا گیا ٹریڈ ڈیفسٹ بڑھ گیا ، نومبر میں درآمدات 7.75 اارب اور اکتوبر میں 6.3 بلین تھیں ، ڈومیسٹک انفلیشن اصل میں گزشتہ سال سے کم ہوئی ہے ، پٹرولیم پروڈکٹ میں 508 ملین ڈالر کا ماہانہ فرق ہے ،درآمد بل میں میں سب سے زیادہ بڑا 500 ملین ا کا فرق مہنگے تیل ،گیس اور کوئلے کی وجہ سے ہے ، تیل اور کوئلے کی قیمتوں میں ٹھہراﺅ دیکھ رہے ہیں، ایل این جی کی قیمتوں کا بھی زور ٹوٹے گا ، مستقل چیز ایک ہے وہ یہ کہ معیشت ترقی کر رہی ہے ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -