’کرپٹو  بطور کرنسی استعمال نہیں ہو گی‘ بھارتی پارلیمنٹ میں پیش کرپٹو اثاثہ بل کی تفصیلات سامنے آگئیں 

’کرپٹو  بطور کرنسی استعمال نہیں ہو گی‘ بھارتی پارلیمنٹ میں پیش کرپٹو اثاثہ ...
’کرپٹو  بطور کرنسی استعمال نہیں ہو گی‘ بھارتی پارلیمنٹ میں پیش کرپٹو اثاثہ بل کی تفصیلات سامنے آگئیں 

  

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن )بھارتی پارلیمنٹ میں پیش کی گئی کرپٹو اثاثہ بل میں تجویز دی گئی ہے کہ کرپٹو کو بطور کرنسی استعمال نہیں کیا جانا چاہیے ،کرنسی کے لیے ریگولیٹر ریزرو بینک آف انڈیا (RBI )ہو گا اور کرپٹو اثاثے سیکیورٹی اینڈ ایکسچینج بورڈ آف انڈیا(SEBI) کے ذریعے ریگولیٹ کیے جائیں گے۔اس بل میں تمام پرائیویٹ کرپٹو کرنسیوں پر پابندی لگانے اور ریگولیشن کو آسان بنانے کی بھی تجویز ہے۔

بھارتی کرپٹو اثاثہ بل کرپٹو اثاثہ کو کرنسی کے متبادل کے طور پر یا ترسیلات زر کے لیے ادائیگی کے نظام کے طور پر استعمال پر پابندی لگانے کی تجویز کرتا ہے۔بھارتی نیوز چینل این ڈی ٹی وی کے مطابق بل میں تقسیم شدہ لیجر ٹیکنالوجی کے لئے ایک سہولتی فریم ورک قائم کرنے اور ریزرو بینک آف انڈیا (RBI) کے ذریعہ جاری کردہ اور RBI ایکٹ کے تحت ریگولیٹ ہونے والی سرکاری ڈیجیٹل کرنسی کی تشکیل کے لئے بھی بنیاد رکھنے کی تجویز دی گئی۔

یہ بل میں اشتہارات اور عوام میں غلط معلومات پھیلانے پر پابندی لگانے کے لیے ایک ریگولیٹری فریم ورک قائم کرنے کی بھی تجویز ہے۔چونکہ کرپٹو اثاثوں کی بنیادی ٹیکنالوجی اب بھی تیار ہو رہی ہے اور اس کے بہت سے استعمال ہیں، بل کسی بھی شخص کو کسی بھی قانونی سرگرمی کے لیے کسی بھی کرپٹو اثاثہ کے تحت ٹیکنالوجی استعمال کرنے والے کو استثنیٰ کی تجویز دیتا ہے۔

اس بل میں افراد کے ساتھ ساتھ کارپوریٹ اداروں کے ذریعے اس کی دفعات کی خلاف ورزی پر جرمانہ عائد کرنے کی کوشش کی گئی ہے کہ یہ جرم قابل ادراک اور ناقابل ضمانت ہوں گے۔کرپٹو اثاثوں کو ریگولیٹ کرنے کے لیے قانون لانے کی وجہ یہ ہے کہ اس سے مالیاتی استحکام کو خطرہ لاحق ہو سکتا ہے اور اس سے نمٹنے کا کوئی قانون موجود نہیں ہے۔ 

مزید :

بزنس -