علماء و مشائخ اور مذہبی قائدین نے مذہبی آزادی پر امریکی رپورٹ کو مسترد کر دیا

علماء و مشائخ اور مذہبی قائدین نے مذہبی آزادی پر امریکی رپورٹ کو مسترد کر ...
 علماء و مشائخ اور مذہبی قائدین نے مذہبی آزادی پر امریکی رپورٹ کو مسترد کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کے علماء و مشائخ اور مذہبی قائدین نے امریکی رپورٹ کو مسترد کر دیا ، پاکستان کا آئین ، قانون اور دستور پاکستان میں رہنے والے تمام پاکستانیوں کے حقوق کا محافظ ہے ، پاکستان میں تمام مذاہب اور مسالک کے ماننے والوں کو مکمل مذہبی آزادی حاصل ہے،  یہ بات چیئرمین پاکستان علماء کونسل و نمائندہ خصوصی وزیر اعظم پاکستان برائے بین المذاہب ہم آہنگی و مشرق وسطیٰ حافظ محمد طاہر محمود اشرفی ، علامہ عبد الحق مجاہد، مولانا نعمان حاشر، مولانا محمد شفیع قاسمی ، مولانا زبیر عابد ، مولانا اسعد زکریا قاسمی ، مولانا اسد اللہ فاروق، مولانا محمد اشفاق پتافی ، مولانا طاہر عقیل اعوان، مولانا عزیز اکبر قاسمی ، مولانا قاسم قاسمی ، علامہ طاہر الحسن ، مولانا اسلم صدیقی اور دیگر نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کہی۔

انہوں نے کہا کہ امریکی وزارت خارجہ کی مذہبی آزادی کی کمیٹی کی طرف سے پاکستان اور سعودی عرب پر الزام لگانا افسوسناک ہے ۔ جعلی اور بے بنیاد پراپیگنڈہ اسلام اور پاکستان دشمن قوتوں اور اداروں کی روش ہے ۔ امریکی مذہبی آزادی کمیٹی کو گذشتہ سال کی طرح ایک بار پھر دعوت دیتے ہیں کہ وہ خود پاکستان آئے اور آ کر حقائق کا مشاہدہ کرے ۔ گذشتہ چند سالوں کے دوران پاکستان میں بین المذاہب وبین المسالک ہم آہنگی کو فروغ ملا ہے اور بہت سارے مسائل جو مسلمانوں اور اقلیتوں کے درمیان تھے وہ حل ہوئے ہیں۔ توہین ناموس رسالت ﷺ ؐ و توہین مذہب کے قانون کا غلط استعمال ختم ہوا ہے ۔ مختلف مسالک و مذاہب کے درمیان روادرای کو فروغ ملا ہے اور عدم برداشت کا رویہ ختم ہوا ہے ۔

مزید :

قومی -بین الاقوامی -سائنس اور ٹیکنالوجی -