پاکستان کوتعلیمی میدان میں جدت سے روشناس ہونے کی ضرورت ہے ، ماریہ سلطان

پاکستان کوتعلیمی میدان میں جدت سے روشناس ہونے کی ضرورت ہے ، ماریہ سلطان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور (جنرل رپورٹر) معروف دفاعی تجزیہ نگار ڈاکٹر ماریہ سلطان اور ساسی یونیورسٹی کی چیئرپرسن ڈاکٹر ماریہ سلطان نے کہا ہے کہ اکیسویں صدی میں پاکستان کو نت نئے چیلنجزسے نبزدآزما ہونے کیلئے تعلیمی میدان میں جدت انگیز طریقوں سے روشناس ہونے کی ضرورت ہے وہ سوموار کو اپنے غیرسرکاری ادارے ساؤتھ ایشین سٹریٹیجک سٹبیلیٹی انسٹیٹیوٹ (ساسی) کے زیراہتمام ساسی یونیورسٹی کی افتتاحی تقریب سے خطاب کررہی تھی اس موقع پر ڈاکٹر ماریہ سلطان نے صدرِ پاکستان کی بطورسرپرستِ اعلیٰ راہنمائی کابطورِخاص شکریہ اداکرتے وزیر دفاع، ساسی مشیران، سی ڈی اے اور شرکاء سے اظہارِ تشکر کیا جن کے تعاون کی بدولت ساسی یونیورسٹی کا خواب شرمندہ تعبیر ہونے میں کامیاب ہوا۔انہوں نے آگاہ کیا کہ یونیورسٹی کی جانب سے پیش کردہ تربیتی کورسز میں انسدادِ دہشتگردی اور سیکیورٹی سٹڈیز، نینوٹیکنالوجی، انفارمیشن اینڈ سائبرسیکیورٹی، پیس اینڈ کنفلکٹ سٹڈیز، گورنس اینڈ پبلک ڈپلومیسی، ٹاؤن پلاننگ اینڈ آرٹیٹکچر ،اورئینٹل اینڈ انٹرفیتھ سٹڈیز اور میڈیا سائنسز شامل ہیں۔   ۔ ڈاکٹر ماریہ نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ دہشت گردی کے خلاف چودہ سال سے زائد جنگ کی بدولت پاکستان میں سیکیورٹی صورتحال کی نوعیت میں کلیدی تبدیلی آئی ہے، جس کی بناء پر روائتی جنگ کے ساتھ غیرروائتی جنگی حربوں کا بھی سامنا کرنا پڑ رہا ہے، انہوں نے اس موقع پر امید کا اظہار کیا کہ پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ پر قائم خودمختار ساسی یونیورسٹی ملکی سلامتی کے حوالے سے علم و آگاہی کے فروغ میں اپنا بھرپور کردار ادا کرے گی۔افتتاحی تقریب میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے وابستہ اعلیٰ افسران، مندوبین، نمایاں تھنک ٹینکس، ماہرین تعلیم، تجزیہ کاروں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔