حامد خان کوفوجی عدالتوں کی مخالفت سے پہلے مستعفی ہوجا نا چاہئے تھا،محمد جمیل

حامد خان کوفوجی عدالتوں کی مخالفت سے پہلے مستعفی ہوجا نا چاہئے تھا،محمد جمیل

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور(جنرل رپورٹر) جمہوری اتحاد کے مرکزی صدر محمد جمیل نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی کے مرکزی رہنما حامد خان کوفوجی عدالتوں کے قیام کی مخالفت سے پہلے پارٹی رکنیت سے مستعفی ہوجا نا چاہیے تھا،پی ٹی آئی میں رہتے ہوئے فوجی عدالتوں کے قیام کی مخالفت دوہرا معیار ہے ،آج یہاں ایک بیان میں انہوں نے کہاپی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان نے ملٹری کورٹس کے قیام کی مکمل حمایت کی ہے اور دہشت گردی کے خاتمہ کیلئے انکا مؤقف قومی امنگوں اور خواہشات کے عین مطابق ہے مگر انکی پارٹی کے جو رہنما فوجی عدالتوں کے قیام کی مخالفت کررہے ہیں انہیں اصولی طور پرپارٹی چھوڑ دینی چاہیئے،انہوں نے کہا منافقت کی سیاست نے پاکستان کو بہت نقصان پہنچایا ہے ،اب وقت آگیا ہے کہ دوہرا معیار رکھنے والے سیاستدانوں کو بے نقاب کیا جائے،انکا کہنا تھا کہ سینئر قانون دان حامد خان سابق چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کے بھی دوست تھے جن پر پی ٹی آئی انتخابی دھاندلی کے سنگین الزامات عائد کررہی ہے،پی ٹی آئی نے فوجی عدالتوں کے قیام کیخلاف سپریم کورٹ سے رجو ع کرنیوالے حامد خان ایڈووکیٹ کی پارٹی رکنیت ختم نہ کی تو اسے سیاسی طور پر نقصان اٹھانا پڑیگا،انہوں نے مزید کہا ملٹری کورٹس کے قیام کے حوالے سے دائر کی گئی پٹیشن غیر آئینی ہے سپریم کورٹ قومی مفاد کو مدنظر رکھتے ہوئے اسے میرٹ پر مسترد کردے۔