جرمانے کی عدم ادائیگی پر سزا کے تعین کیلئے اٹارنی جنرل ، پراسیکیوٹر جنرل نیب معاونت کیلئے طلب

جرمانے کی عدم ادائیگی پر سزا کے تعین کیلئے اٹارنی جنرل ، پراسیکیوٹر جنرل نیب ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور (نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے اس قانونی نکتہ کی وضاحت کے لئے اٹارنی جنرل پاکستان، پراسیکیوٹر جنرل نیب سمیت 3 سینئر وکلاء کو معاونت کے لئے طلب کرلیا ہے کہ کیا جرمانے کی رقم ادا نہ کرنے پر احتساب عدالت مجرم کو قید کی سزا سنا نے کا اختیار رکھتی ہے ۔ جسٹس محمودمقبول باجوہ کی سربراہی میں دورکنی بنچ نے احتساب عدالت کے دائرہ اختیارکے خلاف دائردرخواست پر سماعت شروع کی تو درخواست گزارسابق تحصیلدار پارکو امجد سڈل کے وکیل امجد پرویز نے موقف اختیارکیا کہ نیب آرڈینس کی دفعہ 3 ،17 اور33ای کے تحت احتساب عدالت کے پاس جرمانہ کے عدم ادائیگی کی صورت میں مزید قید دینے کا اختیار نہیں ہے۔ احتساب عدالت صرف قیدکی سزادے سکتی ہے اس کے باوجود احتساب عدالت لاہورنے درخواست گزار کو 2004میں لینڈ ایکوزیشن کلکٹر کی حیثیت سے 9کروڑ کی ادائیگیاں کرنے پر 14سال قید، 9کروڑ جرمانہ اورعدم ادائیگی کی صورت میں مزید 4سال قید کا حکم سنایا جبکہ جرمانے کی عدم ادائیگی کی صورت میں احتساب عدالت کو مزید قید کی سزادینے کا اختیارنہیں ، عدالت نے اس اہم قانونی نکتہ پر اٹارنی جنرل پاکستان ، پراسکیوٹرجنرل نیب اورعدالتی معاونین خواجہ حارث احمد ، سید زاہد حسین بخاری اور ڈاکٹر دانشور ملک کو23 فروری کو عدالتی معاونت کے لیے طلب کرلیا۔

مزید :

صفحہ آخر -