سپریم کورٹ، قتل کرنے والے عمر قید کے مجرم کی سزا کے خلاف اپیل خارج کر دی گئی

سپریم کورٹ، قتل کرنے والے عمر قید کے مجرم کی سزا کے خلاف اپیل خارج کر دی گئی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور(نامہ نگار خصوصی)سپریم کورٹ نے معمولی جھگڑے پر شہری کو قتل کرنے والے عمر قید کے مجرم کی سزا کے خلاف اپیل خارج کر دی۔سپریم کورٹ رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان مسٹر جسٹس ناصر الملک اور مسٹر جسٹس اعجاز احمد چودھری پر مشتمل دو رکنی بنچ نے ملزم محمد سلیم کی عمر قید کے خلاف اپیل پر سماعت کی، ملزم نے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ تھانہ ہنجروال نے 2002میں معمولی تنازع پر شہری اظہر عباس کو قتل کرنے کا مقدمہ درج کیا تھا جس میں ٹرائل کورٹ نے ملزم کو عمر قید کی سزا سنا دی اور ہائیکورٹ نے بھی ملزم کی عمر قید کی سزا برقرار رکھی، مجرم محمد سلیم گزشتہ 8 برسوں سے جیل میں ہے لہذا اس بنیاد پر مجرم کی عمر قید معطل کر کے رہا کیا جائے، ایڈیشنل پراسکیوٹر جنرل مظہر شیر اعوان نے بنچ کو آگاہ کیا کہ ہائیکورٹ نے ملزم محمد سلیم کی اپیل خارج کرتے ہوئے ملزم کی سزا میں اضافے سے متعلق آبزوریشن دی ، جب ہائیکورٹ قتل کیس میں سزا کے اضافے سے متعلق کوئی آبزرویشن یا نوٹس آ جائے تو سزائے موت یا عمر قید معطل نہیں کی جا سکتی جبکہ اسی قانونی نقطے پر سپریم کورٹ کا ایک فیصلہ بھی موجود ہے، سپریم کورٹ نے دونوں طرف سے دلائل سننے کے بعد مجرم کی عمر قید معطل کرنے کی اپیل خارج کر دی۔

مزید :

صفحہ آخر -