ماضی انسان زیادہ عقلمند تھا یا آج کا ؟سائنس نے جواب دے دیا

ماضی انسان زیادہ عقلمند تھا یا آج کا ؟سائنس نے جواب دے دیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


سان فرانسسکو(نیوزڈیسک)امریکی ماہرین نے کہا ہے کہ زمانہ قدیم کے انسان کے مقابلے میں موجودہ انسان میں ذہانت کم ہے اور وقت گزرنے کے ساتھ یہ کم ہو رہی ہے۔سٹین فورڈ یونیورسٹی کے ماہر جنیات ڈاکٹر جیرالڈ کراب ٹری کا کہنا ہے کہ موجودہ دور کے انسان میں جنیاتی تبدیلیوں اور ٹیکنالوجی میں بہتری کے بعد وہ کچھ بے وقوف ہو گیا ہے۔اس کا کہنا ہے کہ ہزار وں سال پرانا انسان زیادہ عقل مند تھا اور اگر ہمیں اس جیسے انسان کی مشکلات کا سامنا کرنا پڑے تو ہم کامیابی سے ہمکنار نہیں ہوں گے اور یہی وجہ ہے کہ موجودہ انسان زیادہ بہتری سے وہ کام سرانجام نہیں دے سکتا جو زمانہ قدیم کا انسان کر سکتا تھا۔اس کا مزید کہنا ہے کہ انسان اپنی صلاحیت کا بہترین استعمال اس وقت کرتا ہے جب اسے روزانہ کی بنیاد پر اپنی بقاءکا مسئلہ درپیش ہواور ماضی کے انسان نے قدرتی آفات اور مشکلات کا روزانہ کی بنیاد پر سامنا کرکے اپنی بقاءکو ممکن بنایا لیکن موجودہ دور کے انسان کے سامنے ایسی کوئی مشکل نہیں ہے۔دوسری جانب ٹیکنالوجی میں ترقی نے انسان کو سہل پسند بنا دیا ہے جس کی وجہ سے وہ دماغی صلاحیت کا استعمال کم کرتا ہے اور نتیجہ یہ ہے کہ انسان دن گزرنے کے ساتھ آرام پسند اور بے وقوف ہوتا جا رہا ہے۔

مزید :

علاقائی -