ہوم ورک طلبہ کے لئے فائدہ مند ، اضافی بوجھ ہے، والدین اور اساتذہ کا ملا جلاردعمل

ہوم ورک طلبہ کے لئے فائدہ مند ، اضافی بوجھ ہے، والدین اور اساتذہ کا ملا ...

لاہور(لیڈی رپوٹر)وزیر اعظم کے معا ون خصو صی نعیم الحق کے بچو ں کے ہو م ورک پر پا بندی لگا نے کے حوالے سے شعبہ تعلیم سے وا بستہ افراد اور والدین نے ملے جلے رد عمل کا اظہا ر کیا ہے۔ روزنا مہ پا کستا ن سے گفتگو کر تے ہو ئے والدین مسز تنویر ، روبیہ ، سو نیا ، عمرا ن ، روحا ، اشرف ، ثمر نے کہا کہ بچے صبح سے لے کر ایک لمبے وقت تک سکو ل میں ٹائم گزا ر کر آتے ہیں اس دوران ان کے پا س نصا بی سر گر میو ں کے حوالے سے کام کر نے کے لئے ایک دورا نیہ ہو تا ہے جس میں وہ با آسا نی اپنا کام کر سکتے ہیں لیکن اس کے با وجو د بچوں کو گھر پر کام کر نے کے لئے ہو م ورک دینا ایک اضا فی بو جھ ہے جس سے بچو ں کے ذہن پر ایک بو جھ سوار رہتا ہے کہ انہوں نے ابھی ہو م وورک کر نا ہے ۔ انہو ں نے کہا کہ ہو م ورک کر نے کے بعد بچوں کے پا س غیر نصا بی سرگر میو ں کا وقت نہیں بچتا ہے ۔ انہو ں نے کہا کہ حکو مت کوچا ہیے کہ وہ سکو لو ں میں مو جو د مسا ئل کی طر ف اپنی تو جہ لا ئے جس سے ہمارے نظا م تعلیم میں ایسے مسا ئل کا خا تمہ ہو سکے ۔جبکہ اسا تذہ اشرف حسین ،را بعہ ، مس ستا رہ ، مس زویا ، ستا ر ،فرحا ن نے ملے جلے ردعمل کا اظہا ر کر تے ہو ئے کہا کہ ہو م ورک بچوں کی صلا حیتوں کو نکھا ر نے کے کام آتا ہے اس سے بچے میں احسا س ذمہ داری بڑھتا ہے۔جبکہ کچھ اساتذہ نے کہا کہ یہ اضا فی بو جھ ہے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...