پانی کا کنکشن قانونی کرانے کے لئے ہیلپ لائن کا قیام

پانی کا کنکشن قانونی کرانے کے لئے ہیلپ لائن کا قیام

لاہور(جنرل رپورٹر)واسا نے غیر قانونی کنکشن کو قانونی کرانے والوں کیلئے ہیلپ لائن قائم کردی ہے،بڑے ہوٹلز، سرکاری دفاتراور پرائیویٹ ہسپتالوں کو پانی پر سبسڈی ختم ، سرکاری محکموں سے وصول کیلئے ٹاسک فورس تشکیل دیدی گئی ،یہ اعلان وائس چیئرمین واسا شیخ امتیاز محمود نے ایم ڈی واسا سید زاہد عزیز اوردیگر افسران کے ساتھ ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر دیگر واسا افسران بھی موجود تھے۔ شیخ امتیاز محمود نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ واسا ایمنسٹی سکیم کے تحت واسا کے تمام سب ڈویژنل دفاتر اور ہیڈ آفس میں درخواستوں کی وصولی کی جائیگی،اگر کسی کو کنکشن لیگل کرانے میں دشواری ہے تو وہ بذریعہ فون 04299263145 اور 99332100 پر کال کرکے اپنی شکایت درج کراسکتا ہے، اس مقصد کیلئے ای میل بھی کی جاسکتی ہے، شیخ امتیاز محمود نے کہا کہ غیر قانونی کنکشن ہولڈرز اپنے کنکشن کو قانونی کروانے کیلئے بذریعہ ڈاک بھی درخواست بھیج سکتے ہیں،ہم چاہتے ہیں کہ غیر قانونی واٹر کنکشن استعمال کرنیوالے اس ایمنسٹی سکیم سے فائدہ اٹھائیں جو 5مارچ کو ختم ہوجائے گی۔

انہوں نے کہاکہ ہمارا ٹارگٹ یہ ہے کہ لوگوں کو ناجائز پانی کے استعمال سے روکا جائے، اس لئے ہم ہرلحاظ سے سہولیات فراہم کررہے ہیں تاکہ کسی کو کنکشن کے معاملے میں پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ ایم ڈی واساسید زاہد عزیز نے کہاکہ تمام بڑے ہوٹلز، پرائیویٹ ہسپتال اور سرکاری محکموں کو پانی پر دی جانیوالی سبسڈی ختم کردی گئی ہے، اسی طرح واسا نے اپنے واجبات کی سرکاری محکموں سے وصولی کیلئے ٹاسک فورس قائم کردی ہے جو ان محکموں سے واسا کے واجبات وصول کریں گی، انہوں نے کہاکہ سزاؤں سے قبل شہریوں کو اس سکیم کے تحت موقع فراہم کررہے ہیں،پانچ مارچ کومقرر کردہ ڈیڈ لائن ختم ہونے کے بعد ایک سال تک قید یا دو لاکھ روپے جرمانہ کی سزا ہوسکتی ہے، اس لئے شہری واسا ایمنسٹی سکیم سے فوری فائدہ اٹھاکر قانونی کارروائی سے خود کو بچائیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...