میپکو ‘ سینکڑوں کام چور ملازمین کا دفاتر پر قبضہ ‘ لائن سٹاف بحران سنگین

میپکو ‘ سینکڑوں کام چور ملازمین کا دفاتر پر قبضہ ‘ لائن سٹاف بحران سنگین

ملتان( سٹاف رپورٹر ) میپکو میں سیکڑوں اسسٹنٹ لائن مینوں( اے ایل ایمز) کی دفاتر میں غیر قانونی اٹیچمنٹ اور غیر متعلقہ ڈیوٹیاں‘ لائن سٹاف کا بحران شدت اختیار کر گیا۔لائنوں پر کام کے لئے اہلکار دستیاب نہیں ۔ مسائل گھمبیر صورت اختیار کر گئے۔ ہائیڈرو یونین نے تمام اسسٹنٹ لائن مینوں کی مختلف دفاتر میں اٹیچمنٹ /غیر متعلقہ ڈیوٹیاں ختم کرکے اصل فیلڈ ڈیوٹی پر بھجوانے اور لائن سپریٹنڈنٹس (بقیہ نمبر39صفحہ12پر )

کے سپرد کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ بتایا گیاہے کہ میپکو میں سیکڑوں اسسٹنٹ لائن مینوں کو نوازتے ہوئے ان کی اصل ڈیوٹی لائنوں پر کام کی بجائے انہیں مختلف سب ڈویژنوں‘ ڈویژنوں ‘ ہیڈ کوارٹرز میں عارضی طور پر اٹیچ کیا گیاہے ۔ کوئی کلرک اور پی اے بنا ہواہے ۔ کوئی نائب قاصد اور کوئی کورٹ کلرک بنا ہوا ہے ۔ کوئی کمپلینٹ سنٹرپر بیٹھا ہوا ہے ۔کوئی ہیڈ کوارٹرز میں انجوائے کر رہا ہے ۔اصل ڈیوٹی کا پتہ نہیں ہے ۔ اس صورتحال کے باعث فیلڈ میں لائن سٹاف کی شدید کمی درپیش ہے اور معاملات گھمبیر صورتحال اختیار کر گئے ہیں اور لائنوں پر کام کے لئے سٹاف نہیں ہے۔ہر فیڈر پر ایک لائن سپریٹنڈنٹ ‘ ایک لائن مین اور2اسسٹنٹ لائن مین مقرر ہونے چاہئیں مگر یہاں یہ صورتحال ہے کہ 10‘10فیڈرز پر محض ایک لائن سپریٹنڈنٹ اور ایک لائن مین تعینات ہے جس کے باعث صارفین کی کمپلینٹس کا ازالہ نہیں ہو پاتا ۔ اس کے لئے سفارش یا رشوت دینا پڑتی ہے۔ بارش اور آندھی کی صورت میں تو کئی کئی روز تک بجلی بحال نہیں ہو پاتی ۔ مزید براں لائن سٹاف کی کمی اور کام کے شدید دباؤ کے باعث حادثات معمول بن گئے ہیں ۔ افسران کے دباؤ‘کمپلینٹس کی زیادہ تعداد پر جلدی میں لائن مین کام کے دوران کرنٹ لگنے کے باعث زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں ۔واپڈا ہائیڈرو یونین نے میپکو اتھارٹی سے مطالبہ کیاہے کہ تمام اسسٹنٹ لائنوں کی غیر متعلقہ ڈیوٹی/اٹیچمنٹ ختم کی جائے اور انہیں ان کی اصل فیلڈ ڈیوٹی پر بھیجا جائے اور لائن سپریٹنڈنٹس کے تحت کیاجائے ۔ اس بعد لائن سٹاف کی باقی خالی اسامیوں پر بھرتی کی جائے اور لائن سٹاف کی کمی کا بحران ختم کیاجائے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...