پورٹل میں موصول شکایات کا ازالہ

پورٹل میں موصول شکایات کا ازالہ
پورٹل میں موصول شکایات کا ازالہ

  


وزیرا عظم عمران خان نے عوامی شکایات اور تجاویز براہ راست سننے کے لیے ’پاکستان سٹیزن پورٹل‘ کا آغاز کیا ۔ اس شعبے کا دفتر وزیرا عظم آفس ہی میں بنایا گیا ہے جس کے ذریعے عوام اپنی شکایات اور تجاویز (مشورے) براہ راست وزیرا عظم آفس کو بھیج سکتے ہیں۔ وزیر اعظم عمران خان براہ راست عوامی شکایات سن سکیں گے اور ان پر کارروائی کے احکامات بھی جاری کریں گے۔

پاکستان سٹیزن پورٹل کے لیے جدید انفارمیشن ٹیکنالوجی کو استعمال کیا جا رہا ہے۔ پورٹل کے ذریعے حکمران عوام کی پہنچ میں آگئے ہیں۔ مسئلہ تعلیم کا ہو یا صحت کا، این او سی نہ بن رہا ہو یا شناختی کارڈ، انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہو رہی ہو یا سوشل میڈیا پر کوئی پریشانی، ٹرانسپورٹ کا ایشو ہو یا کوئی اور مسئلہ، پورٹل پر شکایت وزیرِ اعظم تک پہنچائی جا سکے گی۔

وزیر اعظم عمران خان نے پاکستان سٹیزن پورٹل کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’یہ ہے نیا پاکستان کیونکہ اب حکومت عوام کو جواب دہ ہوگی‘۔اور واقعی یہی حال ہے کہ پورٹل پر اب تک مجموعی طور پر 47 ہزار 5 سو 79 تجاویز موصول ہوئیں جبکہ عوامی فیڈ بیک کے مطابق 24 ہزار 76 افراد نے پورٹل کے قیام اور اس کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کیا۔

حال ہی میں چیف سیکرٹری پنجاب یوسف نسیم کھوکھرنے پاکستان سٹیزن پورٹل سے متعلق اجلاس کی صدارت کر تے ہوئے ہدایت کی ہے کہ پاکستان سٹیزن پورٹل کے تحت موصول شکایات کے جلد از جلد ازالہ کو یقینی بنایا جائے۔ تما م صوبائی محکمے شکایات کے ازالے کیلئے مکمل تعاون فراہم کریں۔ پاکستان سٹیزن پورٹل گورننس کی بہتری کے سلسلے میں اہم ذریعہ ہے جس سے نا صرف عوامی مسائل حل کرنے میں مدد ملتی ہے بلکہ رائے عامہ کا بھی پتا چلتا ہے۔ شکایات کے ازالے سے متعلق پیشرفت کا چیف سیکرٹری خود با قاعدگی سے جائزہ لیا کریں گے۔

تمام صوبائی محکموں اور ڈپٹی کمشنرز کے دفاتر میں فوکل پرسنز مقرر کئے گئے ہیں۔ موصول شکایات کے بروقت ازالے کیلئے روزانہ کی بنیاد پر مانیٹرنگ کی جا رہی ہے۔پنجاب میں اب تک 2لاکھ55ہزار عوامی شکایات موصول ہوچکی ہیں جس میں سے1لاکھ 35 ہزار6 سو75 شکایات کا ازالہ کیا جا چکا ہے۔

بزم اقبال مفکر پاکستان علامہ محمد اقبال کے نام سے منسوب چار کنال کے رقبے پر ایک لائبریری اور بزم اقبال کا سیکرٹریٹ تعمیر کرنا چاہتی ہے۔ لیکن مشکل یہ ہے کہ اس وقت ادارے کے پاس 2.5 مرلے کادفتر ہے۔ جس میں دو چھوٹے چھوٹے کمرے ہیں۔ باقی کے رقبے پر دوسرے ادارے قابض ہیں۔ اس کی شکایت بھی پورٹل میں کی جا چکی ہے مگر ابھی تک کوئی شنوائی نہیں ہوئی۔چیف سیکرٹری پنجاب یوسف نسیم کھوکھر سے اپیل ہے کہ وہ اس معاملے کو بھی فوراً دیکھیں اور بزم اقبال کی زمین واگزار کرائیں تاکہ وہاں ایک عظیم الشان لائبریری بن سکے۔

کیونکہ بزم اقبال کی شائع شدہ کتب کو محفوظ کرنے کے لیے کوئی جگہ مختص نہیں۔بزم اس لائبریری میں علامہ اقبال سے متعلق ساری دنیا میں چھپنے والی تمام مطبوعات رکھنا چاہتی ہے تاکہ علامہ اقبال پر تحقیق کرنے والوں کو ایک چھت کے نیچے تمام سہولیات ہوں۔ ڈپیارٹمنٹ آف لائبریریز اینڈ آرکائیوز ‘ حکومت پنجاب اس لائبریری کے لئے کتب خرید کر فراہم کر سکتا ہے جبکہ لائبریری اور سیکرٹریٹ کی تعمیر کا کام بھی مذکورہ ڈپیارٹمنٹ کے سپرد ہوگا۔

شاعر مشرق علامہ محمد اقبال نے بالعموم پوری دنیااور بالخصوص برصغیر کے مسلمانوں میں آزادی‘بیداری اور شعور پیدا کیا اور اپنی شاعری سے اپنے بعدآنے والے زمانوں کے انسانوں کے لیے بھی کامیابی کی راہ متعین کر دی۔ستم ظریفی یہ ہے کہ ہم اپنے اسلاف تک سے آگاہ نہیں ہیں۔فی زمانہ اپنی ناکامیوں کو کامیابیوں میں اسی وقت بدلا جا سکتا ہے جب ہم اپنی نوجوان نسل کو اپنے اسلاف اور مشاہیر سے روشناس کرائیں۔ اس لائبر یری کے قیام کے بعد پاکستان بلکہ دنیا بھر سے لوگ اقبال پر تحقیق کے لیے آئیں گے اور بزم اقبال آگے چل کراقبال ریسرچ انسٹی ٹیوٹ قائم کرے گی۔ جس میں اقبال آگہی پروگرام اور درس و تدریس اس نوئیت کی ہوگی کہ حکومتی منظوری سے اقبال ریسرچ انسٹی ٹیوٹ طالب علموں کو ڈگری جاری کرنے کا فریضہ ادا کرے گی۔

علامہ اقبال کی شخصیت کا کوئی پہلو ایسا نہیں ہے جس پر لکھا نہ گیا ہو ‘اندورون ملک اور بیرون ملک علامہ اقبال پر بے تحاشا لٹریچر موجود ہے جس میں ایسا لٹریچر بھی ہے جسے کتابی صورت میں ڈھالاجانا ضروری ہے۔ ہم دیکھتے ہیں کہ ملک بھر کی تمام جامعات میں علامہ اقبال پرمتعدد مقالہ جات اور ریسرچ پیپرز لکھے گئے ہیں‘ان مقالہ جات اور ریسرچ پیپرز کو کتابی صورت میں مرتب کیا جائیگا۔

علاوہ ازیں ماہرین اقبالیات‘ریسرچرز اور سکالرز سے اقبال کی شاعری کے مختلف موضوعات پرپیپرز لکھوا کر انہیں بھی مرتب کیا جائیگا۔ علاوہ ازیں تعلیمات اقبال کا عہد حاضر میں اطلاق ‘ تصور خودی‘ تصور امامت‘ نظریہ فوق البشر‘ اقبال اور نوجوان نسل‘ پیغام وحدت امت‘ اقبالی فکر کی آفاقیت‘ عسکری و جہادی افکار‘ غیر ملکی ثقافتی یلغار وغیرہ کے موضوعات پر کتابیں بزم اقبال کے سالانہ طباعتی منصوبہ کے ساتھ تالیف کی جائیگی۔

چیف سیکرٹری پنجاب جناب یوسف نسیم کھرکھر صاحب کا تعلق ملتان کے ایک ممتاز اور تعلیم یافتہ خاندان سے ہے۔ راقم الحروف کا تعلق بھی ملتان ہی سے ہے۔ لہذا چیف سیکرٹری یوسف نسیم کھوکھر سے اپیل ہے کہ وہ اپنی اولین فرصت میں اس جانب توجہ دیں اور بزم اقبال کی زمین واگزار کروا ئیں تاکہ وہاں ایک عظیم الشان لائبریری اور سیکرٹریٹ تعمیر ہو سکے ۔ یوں عظیم مفکر و شاعر علامہ اقبالؒ کی تصانیف اور ان پر لکھی گئی تصانیف کو محفوظ کیا جا سکے۔

مزید : رائے /کالم


loading...