لڑکے نے ریسٹورنٹ کے باہر نوجوان لڑکی کو گولی مار کر قتل کر دیا لیکن کیوں ؟ جواب جان کر آپ کے بھی رونگٹے کھڑے ہو جائیں گے

لڑکے نے ریسٹورنٹ کے باہر نوجوان لڑکی کو گولی مار کر قتل کر دیا لیکن کیوں ؟ ...
لڑکے نے ریسٹورنٹ کے باہر نوجوان لڑکی کو گولی مار کر قتل کر دیا لیکن کیوں ؟ جواب جان کر آپ کے بھی رونگٹے کھڑے ہو جائیں گے

  


نوشہرہ (ڈیلی پاکستان آن لائن )عبدالولی خان یونیورسٹی کے طالبعلم نے شادی سے انکار کرنے پر اپنی ہم جماعت لڑکی کو مردان کنٹونمنٹ میں واقع ریسٹورنٹ کے باہر مبینہ طور پر گولی مار کر قتل کر دیا ۔

تفصیلات کے مطابق نوجوان لڑکی کا نام گلالئی تھا جو کہ عبدالولی خان یونیورسٹی میں ایم فل کی طالبعلم تھی ، وہ اپنے اہل خانہ اور دوستوں کے ساتھ ریسٹورنٹ میں کھانا کھا رہی تھی کہ اسی دوران ملزم اپنی موٹر سائیکل پر اسلحہ لے کر وہاں پہنچا ۔

عزیز جمال نامی اس لڑکے نے لڑکی سے ملنے کی خواہش کا اظہار دیا اور انکار کی صورت میں بندوق سر پر رکھ کر خود کشی کی دھمکی دی جو کہ کام کر گئی اور لڑکی ریسٹورنٹ سے باہر آ گئی ۔

لڑکی جیسے ہی ریسٹورنٹ سے باہر آئی ملزم نے مبینہ طور پر گولی چلا کر اسے موقع پر ہی قتل کر دیا تاہم وہاں موجود ملٹری پولیس کے اہلکار نے ملزم کو فوری قابو کر لیا اور پولیس کے حوالے کر دیا ۔

پولیس نے ملزم اور اسلحہ کو قبضہ میں لے کر قانونی کارروائی کا آغاز کر دیا ہے ۔ابتدائی تفتیش میں ملزم نے اپنا جرم قبول کر لیا ہے اور قتل کے پیچھے وجہ بھی رشتہ سے انکار بتائی ہے جس کی شادی پکی ہو گئی تھی ۔

لڑکے کی جانب سے گلالئی کے گھر والوں کو شادی کیلئے رشتہ بھیجا گیا تھا لیکن انہوں نے انکار کر دیا کیونکہ لڑکی کی منگنی ہو چکی تھی اور جلد شادی بھی ہونے والی تھی ۔گلالئی اس روز اپنی ماں ، انکل اور دوستوں کے ساتھ ریسٹورنٹ میں گئی تھی جہاں اس کیلئے دعوت کا انعقاد کیا گیا تھا ۔

مزید : علاقائی /خیبرپختون خواہ /مردان


loading...