مشرف دور میں این آر او اہم مغربی ملک کے مفادات کا تحفظ کرنے کیلئے کروایاگیا :ایاز امیر کا دعویٰ

مشرف دور میں این آر او اہم مغربی ملک کے مفادات کا تحفظ کرنے کیلئے کروایاگیا ...
مشرف دور میں این آر او اہم مغربی ملک کے مفادات کا تحفظ کرنے کیلئے کروایاگیا :ایاز امیر کا دعویٰ

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)تجزیہ کار ایاز امیر نے کہاہے کہ پرویز مشر ف کے دور میں پیپلز پارٹی کے ساتھ این آر او برطانیہ کے مفادات کا تحفظ کرنے کیلئے کروایا گیا تھا ۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”تھنک ٹینک“ میں گفتگوکرتے ہوئے ایاز امیر نے کہا کہ این آر او امریکہ اوربرطانیہ نے کروایا تھا ، پاکستانی اشرافیہ کے ذہن سے برطانیہ کا راج کم نہیں ہوا ، اس وقت مشرف اوران کے پرنسپل سیکرٹری طارق عزیز نے بھی اس میں اہم کردار ادا کیا تھا، وہ سمجھتے تھے کہ بے نظیر بھٹو کولاکر حکومت کاحصہ بناناچاہئے ، اس سے ان کاخیال تھا کہ ایسا کرنے سے ان کے مفاد اور برطانیہ کے مفاد کوتقویت پہنچے گی ۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف تین بار وزیر اعظم رہے ہیں جو وہ اب براستہ ہسپتال کرنے جارہے ہیں ، یہ کرنے کا ان سے پچھلے سال کہا گیا تھا کہ آپ واپس نہ آئیں ، اس وقت بیگم کلثوم نواز بیمار تھیں اور ان کی رحلت بھی وہیں ہوئی ، اس وقت ان کے پاس معقول جواز بھی موجود تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ا س وقت ان کوڈٹ جانے کا مشورہ دینے والے مشاہد حسین اور دیگر کہاں ہیں ؟ وہ اب کہیں نظر ہی نہیں آتے ۔ انہوں نے کہا کہ اب اگر نواز شریف کو کہیں اور سے ٹھنڈی ہوائیں آرہی ہیں تو اس کا مطلب ہے کہ ڈھیل کہیں اور سے آرہی ہے کیونکہ حکومت تو یہ نہیں چاہے گی کہ نواز شریف کو یہ رعایت دی جائے ۔

مزید : قومی


loading...